استنبول میں سگریٹ نوشی پر گزشتہ سال 15ملین لیرا جرمانہ

0 208

استنبول میں تمباکو نوشی پر پابندی عائد کی خلاف ورزی کرنے والوں پر ترک حکام نے جرمانہ عائد کر دیا ہے، ترک حکام نے استنبول کے 6 ہزار 6 سو ترپن مقامات پرجرمانہ عائد کیا جنہوں نے گزشتہ سال بند مقامات پر سگریٹ نوشی کی اجازت دے رکھی تھی جبکہ جرمانے کی رقم 15 ملین ترکی لیرا (3۔8 ملین یورو) سے بھی بڑھ گئی ہے۔

سگریٹ نوشی

صوبائی صحت عامہ کے ڈائریکٹر اردوعان کوجاییعیت نے نشاندہی کی ہے کہ موسم سرما میں بند علاقوں میں تمباکو کی مصنوعات کا استعمال بڑھ جاتا ہے۔ کوجاییعیت نے 79 سپروائیزرز کے ساتھ مل کر وزارت صحت کے مرکز ابلاغ کی جانب سے آنے والے اعتراضات پر نظر ثانی کے بعد بیان دیا تھا اور کاروبار کے مالکان خاص طور پر کیفے اور ریستوران چلانے والوں کا تمباکو نوشی کی پابندی کے باوجود انکی بے جا استعمال  سے خبردار کیا ہے ۔

کوجاییعیت نے مزید کہا کہ کیفے اور ریستوران کے مالکان پہلے سے ہی تمباکو کی مصنوعات کی روک تھام اور کنٹرول کے قانون سے آگاہ ہیں۔ کوجاییعیت نے کہا کہ ”کاروباری حضرات نے قانون کو اچھی طرح جان لیا ہے لیکن وقت کے ساتھ ساتھ کاروباری حضرات پوچھتے ہیں، ہم کیسے اپنے علاقے کو قانون کے عین مطابق ڈھال سکتے ہیں’؟ ہم بس سزا تو نہیں دیتے۔۔۔ ہمارا مقصد لوگوں کو سزا دینا تو نہیں مگر ایسے مقامات پیدا کرنا بھی ہے جہاں سے انہیں معلومات اور خدمات حاصل ہوں”۔

کوجاییعیت نے اکثر حفاظت کے اطلاق کا نقطہ اٹھایا ہے "اگر آپ چھت (سائباں)کے اندر ہیں، یہ تو ایک بند جگہ ہے۔ قانون میں اسکی اندرونی اور بیرونی حدود کی نشاندہی کی گئی ہے۔ اگر لوگ غیرمناسب جگہ پر تمباکو نوشی کریں گے تو ہمیں انکو سزا دینا ہو گی”۔

کوجاییعیت نے ریمارکس دیے کہ تمباکو نوشی چھوڑنے والوں کو وزارت صحت نے مفت علاج کی سہولیات فراہم کرتی ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ گزشتہ سال 43,606 افراد نے اس عادت کو ترک کرنے کے لیے پولی کلینک میں درخواست دی تھی اور 938, 12 افراد تمباکو نوشی ترک کرنے میں کامیاب ہو گئے ہیں۔

تبصرے
Loading...