ترکی خشک سالی کا شکار صومالیہ کو گیارہ ہزار ٹن کا امدادی سامان ارسال کرے گا

0 208

ترکی کے نائب وزیر اعظم وصی کائناک نے تاریخ کی بد ترین قحط سالی کا شکار صومالیہ کا دورہ کیا

صومالیہ
ترکی کے نائب وزیر اعظم ایک بڑے وفد کی قیادت کرتے ہوئے اتوار کے دن صومالیہ کے دارالحکومت موغا دیشو پہنچے
نائب وزیر اعظم اور ان کے وفد نے صومالیہ کے صدر محمد عبداللہ محمد فرماجو سے ان کے محل میں ملاقات کی اور دونوں ممالک کے باہمی دلچسپی کے امور اور موجودہ کرائسس کے حوالہ سے گفتگو کی
نائب وزیر اعظم نے کہا کہ ترکی صومالیہ کو جلد گیارہ ہزار ٹن امدادی سامان بھیجے گہ
وفد نے 170 ٹن امدادی سامان اتوار کے دن عطیہ کیا اور مزید گیارہ ہزار ٹن سامان عنقریب بھیجا جائے گا
صومالیہ کے صدر نے ترکی اور اس کے عوام کا دلی شکریہ ادا کیا اور ان کی اس بروقت امداد کو خوش دلی سے قبول کیا
نائب وزیر اعظم کے وفد میں ترکش ریڈ کریسٹ کے صدر، ترکش کوآپریشن اینڈ کو آرڈینیشن (TIKA ) کے چیف اور دیگر امدادی اداروں کے سربراہان شامل تھے.
واضح رہے کہ صومالیہ کی حکومت نے ملک کو حالیہ خشک سالی اور قحط کی وجہ سے آفت زدہ قرار دیا ہے.
کم از کم آدھی آبادی کو ایمرجنسی سپورٹ کی ضرورت ہے.. یہ 1945 سے لے کر اب تک کی بدترین قحط سالی ہے. اس قحط سالی نے صومالیہ کے 18 میں سے 11 شہروں کو شدید متاثر کیا ہے.جہاں مارچ میں بھوک اور کالرا کی وبا پھیلنے سے 118 افراد کی موت واقع ہوچکی ہے

تبصرے
Loading...