ترکی کا نیا صدارتی نظام، کس کے مفاد میں ہے؟ – حمزہ تکین

0 289

حمزہ تکین باخبر ترک صحافی ہیں، وہ عربی زبان میں عالمی اخبارات میں لکھتے ہیں، ترکی می نئے متعارف کروائے جانے والے صدارتی نظام اور اس کے لئے آئینی ترمیم پر ان کا تبصرہ پیش خدمت ہے- آر ٹی ای اردو

 

ﮨﺮ ﻭﮦ ﭼﯿﺰ ﺟﺲ ﻣﯿﮟ ﻧﻔﻊ ﮨﻮ ﻭﮦ ﻣﺼﻠﺤﺖ / ﻣﻔﺎﺩ ﮐﮩﻼﺗﯽ ﮨﮯ ﭼﺎﮨﮯ ﻭﮦ ﻧﻔﻊ ﮐﮯ ﺣﺼﻮﻝ ﮐﮯ ﻟﺌﮯ ﮨﻮ ﯾﺎ ﻧﻘﺼﺎﻥ ﺳﮯ ﺑﭽﻨﮯ ﮐﮯ ﻟﺌﮯ ﮨﻮ،
ﻟﮩﺬﺍ :

ﻧﺌﮯ ﺁﺋﯿﻦ ﻣﯿﮟ ﺗﺮﮐﯽ ﮐﺎ ﻣﻔﺎﺩ ﮨﮯ … ﺍﺳﮑﮯ ﺩﺷﻤﻨﻮﮞ ﮐﺎ ﻧﮩﯿﮟ-

ﻧﺌﮯ ﺁﺋﯿﻦ ﻣﯿﮟ ﺗﺮﮎ ﻗﻮﻡ ﮐﺎ ﻣﻔﺎﺩ ﮨﮯ … ﻣﺨﺎﻟﻔﯿﻦ ﮐﺲ ﻧﮩﯿﮟ-

ﻧﺌﮯ ﺁﺋﯿﻦ ﻣﯿﮟ ﺗﺮﮎ ﺟﻤﺎﻋﺘﻮﮞ ﮐﺎ ﻣﻔﺎﺩ ﮨﮯ … ﻓﺘﻨﮧ ﭘﻬﯿﻼﻧﮯ ﻭﺍﻟﻮﮞ ﮐﺎ ﻧﮩﯿﮟ-

ﻧﺌﮯ ﺁﺋﯿﻦ ﻣﯿﮟ ﺗﺮﮐﯽ ﮐﯽ ﻣﻌﯿﺸﺖ ﮐﺎ ﻣﻔﺎﺩ ﮨﮯ … ﺍﺳﮑﮯ ﺣﺮﯾﻔﻮﮞ ﮐﺎ ﻧﮩﯿﮟ-

ﻧﺌﮯ ﺁﺋﯿﻦ ﻣﯿﮟ ﺗﺮﮐﯽ ﮐﯽ ﺑﻘﺎ ﮐﺎ ﻣﻔﺎﺩ ﮨﮯ … ﺍﻧﺎﺭﮐﯽ ﭘﻬﯿﻼﻧﮯ ﻭﺍﻟﻮﮞ ﮐﺎ ﻧﮩﯿﮟ-

ﻧﺌﮯ ﺁﺋﯿﻦ ﻣﯿﮟ ﺳﺎﻝ 2023 ﺀ .. ﮐﮯ ﺧﻮﺍﺏ ﮐﯽ ﺗﮑﻤﯿﻞ ﮐﺎ ﻣﻔﺎﺩ ﮨﮯ … ﺧﺪﺷﺎﺕ ﺭﮐﻬﻨﮯ ﻭﺍﻟﻮﮞ ﮐﺎ ﻧﮩﯿﮟ-

ﻧﺌﮯ ﺁﺋﯿﻦ ﻣﯿﮟ ﺁﺯﺍﺩﯼ ﺍﻭﺭ ﺟﻤﮩﻮﺭﯾﺖ ﮐﺎ ﻣﻔﺎﺩ ﮨﮯ … ﺻﺮﻑ ﺯﺑﺎﻧﯽ ﺩﻋﻮﮮ ﺍﻭﺭ ﺍﺱ ﮐﺎ ﮐﺎﺭﻭﺑﺎﺭ ﮐﺮﻧﮯ ﻭﺍﻟﻮﮞ ﮐﺎ ﻧﮩﯿﮟ-

ﻧﺌﮯ ﺁﺋﯿﻦ ﻣﯿﮟ ﺗﺮﮐﯽ ﮐﯽ ﻃﺎﻗﺖ ﮐﺎ ﻣﻔﺎﺩ ﮨﮯ … ﺍﺱ ﺳﮯ ﺧﻮﻓﺰﺩﮦ ﮨﻮﻧﮯ ﻭﺍﻟﻮﮞ ﮐﺎ ﻧﮩﯿﮟ-

ﻧﺌﮯ ﺁﺋﯿﻦ ﻣﯿﮟ ﺗﺮﮐﯽ ﺳﮯ ﻣﺤﺒﺖ ﮐﺮﻧﮯ ﻭﺍﻟﻮﮞ ﮐﺎ ﻣﻔﺎﺩ ﮨﮯ … ﻧﻔﺮﺕ ﮐﺮﻧﮯ ﻭﺍﻟﻮﮞ ﮐﮯ ﻧﮩﯿﮟ-

ﻧﺌﮯ ﺁﺋﯿﻦ ﻣﯿﮟ ﺳﺎﺭﮮ ﺗﺮﮐﯽ ﮐﺎ ﻣﻔﺎﺩ ﮨﮯ … ﮐﺴﯽ ﻣﺨﺼﻮﺹ ﺷﺨﺺ ﮐﺎ ﻧﮩﯿﮟ-

ﻧﺌﮯ ﺁﺋﯿﻦ ﻣﯿﮟ ﺳﺎﺭﮮ ﺗﺮﮐﯽ ﮐﺎ ﻣﻔﺎﺩ ﮨﮯ … ﮐﺴﯽ ﺍﯾﮏ ﺟﻤﺎﻋﺖ ﮐﺎ ﻧﮩﯿﮟ-

ﻧﺌﮯ ﺁﺋﯿﻦ ﻣﯿﮟ ﺳﺎﺭﮮ ﺗﺮﮐﯽ ﮐﺎ ﻣﻔﺎﺩ ﮨﮯ … ﮐﺴﯽ ﻣﺨﺼﻮﺹ ﻃﺒﻘﮯ ﮐﺎ ﻧﮩﯿﮟ-

ﻧﺌﮯ ﺁﺋﯿﻦ ﻣﯿﮟ ﮨﻤﺎﺭﺍ ﻣﻔﺎﺩ ﮨﮯ ﺍﻥ ﮐﺎ ﻧﮩﯿﮟ ﺍﻭﺭ ﮨﻤﺎﺭﺍ ﻣﻔﺎﺩ ﺍﻥ ﺳﮯ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﺍﮨﻢ ﮨﮯ-

ترجمہ: جویریہ اے ڈی

تبصرے
Loading...