ترک ادارہ برائے تعاون و باہمی رابطہ (ٹیکا) کی طرف سے شاہ نجاشی کے مقبرے کی بحالی کا منصوبہ مکمل

0 533

ترک ادارہ برائے تعاون و باہمی رابطہ (ٹیکا) حبشہ کے بادشاہ نجاشی کے مقبرے کی بحالی کا پروجیکٹ مکمل کر رہا ہے۔ حبشہ کا علاقہ ایتھوپیا کی ریاست اقسوم میں آتا ہے۔

منصوبہ سے قبل مقبرہ

ایتھوپیا کے صدر مقام ادیس ابابا میں ٹیکا کوارڈینیٹر فضل اکین ایردوان نے صحافیوں کو بتایا ہے کہ دارالحکومت سے 800 کلومیٹر کے فاصلے پر چلنے والا منصوبہ جو مسجد اور مقبرے پر مشتمل ہے، اس سال ختم مکمل ہو جائے گا۔

منصوبہ کی تکمیل بارے مزید انہوں نے کہا: "ہم  نے مہمانوں اور زائرین کی ضروریات کو پورا کرنے کے لئے ایک مکمل خوراک کورٹ تعمیر کی ہے، اس کے علاوہ ایک  باورچی خانہ اور کثیرالمقصد ہال بھی تعمیر کیا گیا ہے جس میں پانچ سو لوگوں سما سکتے ہیں”۔

بحالی ٹیم نے مقبرے کے لیے پانی کی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے دو مختلف مقامات پر 160 ٹن پانی کے دو بڑے ڈپو تعمیر کیے ہیں۔

 

تین سال سے جاری منصوبے پر انہوں نے مزید کہا کہ مسجد اور مقبرے کے دروازوں، کھڑکیوں اور ماربل میں عثمانی فن تعمیر کی واضع جھلک نظر آئے گی۔

فضل ایردوان نے کہا کہ ترکی ایتھوپیا کی مذہبی خدمات بارے کئی معاملات پر تجاویز پیش کر رہا ہے اور چاہتا ہے کہ شاہ نجاشی کے مقبرے کو ترک اداروں کے ذریعے حج اور عمرہ کے راستوں میں شامل کیا جائے۔ اگر ایسا ہو جاتا ہے تو یہ ایتھوپیا کی سیاحت میں ایک بڑا اضافہ ہو گا۔

نجاشی مسجد کے امام محمد ابراہیم نے کہا کہ تزئین و آرائش کے کام سے پہلے، مسجد اچھی حالت میں نہیں تھی، لیکن بحالی منصوبے نے سب کچھ  تبدیل کر دیا ہے۔ امام نے کہا کہ میں ہمیشہ ترکی اور ترک عوام کے لیے دعاء گو رہتا ہوں، "ترکی صرف ہماری مدد نہیں کر رہا، بلکہ یہ سارے مسلمانوں کی مدد کر رہا ہے”۔

نجاشی اصمحہ نام، باپ کا نام ابحر نجاشی شاہی لقب حبشہ (ابی سینا) کے بادشاہ تھے، عرب میں عطیہ کے نام سے بھی مشہور ہیں وہ 614 سے 631 تک حاکم رہے۔ یہ ریاست حالیہ اریٹیریا اور ایتھوپیا میں واقع تھی جس کے لوگ تجارت میں مشہور تھے۔ یہ ریاست 100ء سے 940ء تک قائم رہی۔

بادشاہ نجاشی نے قریش کے ظلم و ستم کی وجہ سے ہجرت کرنے والے مسلمانوں کو پناہ دی تھی۔ حبشہ کی ریاست اس وقت عیسائی ریاست تھی۔ اسلامی تاریخ میں اسے پہلی ہجرت کہا جاتا ہے۔

تبصرے
Loading...