سپریم الیکشن بورڈ رواں ہفتے ریفرنڈم کی تاریخ کا اعلان کرے گا، وزیراعظم ترکی

0 187

وزیراعظم ترکی بن علی یلدرم نے کہا ہے کہ ترک سپریم الیکشن بورڈ رواں ہفتے صدارتی نظام کے ریفرنڈم کے لیے تاریخ کا اعلان کرے گا۔

انہوں نے یہ بات آق پارٹی کے صوبائی عہدیداران سے انقرہ میں ملاقات کے دوران کہی۔ انہوں نے کہا کہ اپریل کے پہلے دو ہفتوں میں ہو گی یا 20 اپریل تک جا سکتی ہے۔

بن علی یلدرم نے اپوزیشن کے آئینی ترمیم اور صدارتی نظام پرردعمل کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ یہ نظام کی تبدیلی ہو رہی ہے نہ کہ رجیم کی تبدیلی ہے جیسا کہ پروپیگنڈا کیا رہا ہے۔

انہوں نے پارلیمان کے اختیارات میں اضافے کی بات کرتے ہوئے کہا کہ نئے نظام میں نہ صرف صدر بلکہ پارلیمنٹ بھی اعلیٰ عدالتی اداروں کے ممبران کا تعین کر سکے گی، جس کے نتیجے میں عدلیہ زیادہ غیر جانبدار اور موثر کردار ادا کر سکے گی۔

"تاحال پارلیمنٹ وہی کرتی ہے جو حکمران جماعت چاہتی ہے، ہمیں ایک دوسرے کو دھوکہ نہیں دینا چاہیے۔ لیکن نئے نظام میں پارلیمان کا ہر ممبر اسمبلی اس قابل ہو گا کہ کوئی بل لا سکے، اس پر بحث کر سکے اور اسے منظور کروا دے۔ نئے نظام میں ممبران اسمبلی کے اختیارات میں اضافہ ہوا ہے”۔

وزیراعظم نے کہا کہ آق پارٹی، ریفرنڈم کی مہم صدر رجب طیب ایردوان کے تعاون سے چلائے گی اور ملت پرست تحریک پارٹی (ایم ایچ پی) کے ساتھ مل کر مہم نہیں چلائی جائے گی۔ جس نے آئینی ڈرافٹ کی تیاری اور منظوری میں آق پارٹی کی مدد کی اور ریفرنڈم کروانے کیلئے متعین کردہ 330 پارلیمانی ووٹوں کو عبور کرتے ہوئے 345 ووٹ آئینی ترمیم اور صدارتی نظام کے حق میں آئے۔

انہوں نے کہا کہ نیا نظام نہ صرف ترکی کی سیاست اور معیشت کو مضبوط بنا دے گا بلکہ عالمی سطح پر اس کے اثر و رسوخ کو بڑھا دے گا۔ انہوں نے اپوزیشن کے اس دعویٰ کو رد کر دیا کہ نیا نظام رجیم کی تبدیلی ہے۔

انہوں نے صدر رجب طیب ایردوان کی طاقتور قیادت کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ایک سال پہلے ترکی شامی معاملات میں کہیں نہیں تھا لیکن آج اہم کردار ادا کر رہا ہے۔

بن علی یلدرم نے شام میں ہونے والے آپریشن فرات ڈھال پر بات کرتے ہوئے کہا کہ اس آپریشن کا بنیادی مقصد خطے کے علاقوں کو دہشتگردوں سے آزاد کروانا ہے اور اپنے شامی بھائیوں کو ان کے گھروں میں رہنے کے لیے پرامن اور آزاد فضا فراہم کرنا ہے۔

سرکاری گزٹ میں شائع ہونے کے بعد ریفرنڈم کا 60 دنوں کے اندر ہونا لازم ہے۔ جیسے ہی صدر مملکت پارلیمان کی طرف سے منظور کی گئی ترمیم پر دستخط کریں گے اسے سرکاری گزٹ میں شائع کر دیا جائے گا۔ اس لحاظ سے ممکنہ تاریخ 2 اپریل بنے گی۔

اگر ترک ملت نے ریفرنڈم میں صدارتی نظام کے حق میں ووٹ دے دیا تو صدارتی نظام نومبر 2019 کے انتخابات کے بعد سے نافذ ہو جائے گا۔

تبصرے
Loading...