ہم یورپی ممالک کو جمہوریت اور انسانی حقوق کے احترام کی دعوت دیتے ہیں، صدر ایردوان

0 264

ایسوسی ایشن آف اناطولین براڈکاسٹرز سے صدارتی کمپلیکس میں خطاب کرتے ہوئے صدر ایردوان یورپی ممالک کی طرف سے ترکی کی مخالفت پر بات کی۔ انہوں نے کہا: "ترکی اس قسم کا ملک نہیں جس کے احترام نہ کیا جائے اور پیچھے دھکیلا جائے۔ یا اس کے وزراء کو واپس موڑا جائے اور اس کے شہریوں کو زمین پر گھسیٹا جائے۔ یہ تمام واقعات دنیا بھر میں گہرائی سے دیکھے گئے ہیں۔ اگر تم نے یہی رویہ برقرار رکھا تو کل ایک بھی یورپی باشندہ دنیا میں کہیں بھی امن اور سکون کا ایک قدم نہیں اٹھا سکے گا۔ اگر تم نے اس خطرناک راستے کا دروازہ کھول دیا تو یہ تم ہی ہو گے جو اس کا سب سے زیادہ نقصان اٹھاؤ گے”۔

اس سے قبل صدر ایردوان نے نائب وزیر اعظم نعمان قرتولمش کے ہمراہ مقامی اور علاقائی براڈ کاسٹرز کے نمائندہ کا صدارتی کمپلیکس میں استقبال کیا۔ 

آپ نے 15جولائی کی ناکام بغاوت کے منصوبہ سازوں کو اصل چہرے کو بے نقاب کیا ہے 

انہوں نے کہا وہ بھول نہیں سکتے جب مقامی میڈیا نے کئی جگہوں پر مشترکہ پلیٹ فارم بنا کر 15جولائی کی شب عوام تک بغاوت کے منصوبہ سازوں کی خبریں براڈ کاسٹ کیں۔ صدر ایردوان نے کہا: "آپ نے اس رات میری پہلی تقریر نشر کی، جو میں نے مرمریس میں کی۔ قومی میڈیا بعض تیکنیکی وجوہات سے نشر نہیں کر پا رہا تھا۔ تم نے وہ کام کم ذرائع اور آلات سے ممکن بنایا۔ میں جانتا ہوں کہ تم نے بحیثیت اناطولین میڈیا، 15 جولائی کی بغاوت کے منصوبہ سازوں کا اصل چہرہ بے نقاب کیا اور قوم کی آزادی اور مستقبل کی جنگ میں ایک کلیدی کردار ادا کیا۔ میں آپ کے جمہوری ریلیوں کے اختتام تک اس غیر متزلزل کردار پر ہر ایک کا شکریہ ادا کرتا ہوں”۔

انہوں نے کہا: "مقامی میڈیا کی طاقت دراصل کسی بھی ملک میں جمہوریت کی طاقت کا اظہار ہے۔ اسلیے ایک سچی طاقت کبھی ریٹنگ اور سرکولیشن سے نہیں ناپی جا سکتی”۔

ہم یورپی ممالک کو جمہوریت اور انسانی حقوق کے احترام کی دعوت دیتے ہیں

صدر ایردوان نے اس موقع پر کہا: ” ترکی اس قسم کا ملک نہیں جس کے احترام نہ کیا جائے اور پیچھے دھکیلا جائے۔ یا اس کے وزراء کو واپس موڑا جائے اور اس کے شہریوں کو زمین پر گھسیٹا جائے۔ یہ تمام واقعات دنیا بھر میں گہرائی سے دیکھے گئے ہیں۔ اگر تم نے یہی رویہ برقرار رکھا تو کل ایک بھی یورپی باشندہ دنیا میں کہیں بھی امن اور سکون کا ایک قدم نہیں اٹھا سکے گا۔ اگر تم نے اس خطرناک راستے کا دروازہ کھول دیا تو یہ تم ہی ہو گے جو اس کا سب سے زیادہ نقصان اٹھاؤ گے۔ اس لیے ترکی یورپی ممالک کو جمہوریت اور انسانی حقوق کے احترام کی دعوت دیتا ہے۔ یہ خیال رکھنا چاہیے کہ سب سے پہلے اور سب سے زیادہ یورپین کو ان اقدار پر عمل کرنا چاہیے، جیسا کہ ہم کرتے ہیں”۔

تبصرے
Loading...