صومالیہ میں خودکش حملہ، ترک شہری سمیت 4 جاں بحق، متعدد زخمی

0 455

صومالیہ میں ایک سڑک کی تعمیر کے دوران خودکش حملے میں ایک ترک شہری سمیت 4 افراد جاں بحق جبکہ متعدد دیگر ترک مزدور زخمی ہو گئے ہیں۔

وزارت خارجہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ یہ حملہ مقدیشو-افجویی سڑک کی تعمیر کے دوران ہوا کہ جس پر ایک ترک کمپنی کام کر رہی ہے۔ وزارت کا کہنا ہے کہ اس حملے میں 4 ترک شہری زخمی بھی ہوئے ہیں۔

وزارتِ خارجہ نے اس حملے کی مذمت کرتے ہوئے صومالیہ کی حکومت اور عوام کے ساتھ اظہارِ یکجہتی کیا ہے۔

ابتدائی خبروں کو مسترد کرتے ہوئے کہ حملہ ترک دستوں کو ہدف بنا کر کیا گیا تھا، سکیورٹی ذرائع کا کہنا ہے کہ موٹر سائیکل حملہ آور نے ترک کارکنوں کو نشانہ بنایا تھا۔

یہ حملہ مقدیشو میں ترک فوجی اڈے، کیمپ TURKSOM، سے 15 کلومیٹرز کے فاصلے پر ہوا اور اس حملے میں کوئی فوجی اہلکار متاثر نہیں ہوا۔

صومالیہ میں ترکی کی بیس اس کا سب سے بڑا بیرونِ ملک فوجی تربیتی اڈہ ہے جس کا افتتاح 2017ء میں ہوا تھا۔

2011ء کے قحط میں ترکی کی بڑے پیمانے پر امدادی کارروائیوں کی وجہ سے صومالیہ کے عوام ترکی کو بہت چاہتے ہیں اور اس کی امداد کا سلسلہ اب بھی نجی اداروں کی مدد سے جاری ہے۔

اس نے اسکول، ہسپتال اور بنیادی ڈھانچہ بنایا ہے اور صومالیہ کے باشندوں کو ترکی میں تعلیم کے لیے وظائف بھی دیے ہیں۔ صدر رجب طیب ایردوان نے متعدد بار مقدیشو کا دورہ کیا ہے اور 2011ء میں جب انہوں نے پہلی بار صومالیہ کا دورہ کیا تھا تو وہ 20 سال سے جنگ سے تباہ حال اس ملک کا دورہ کرنے والے پہلے غیر افریقی حکمران بنے تھے۔

ترکی نے افریقی ملک کو 400 ملین ڈالرز سے زیادہ کی امداد دی ہے جو ملک بھوک اور بدحالی کے خلاف جدوجہد کرنے والے ملک کے لیے سب سے بڑی امدادی مہم ہے۔

تبصرے
Loading...