انتخابات 2019: آق پارٹی عوام کو نیا نظام سمجھانے پر توجہ دے گی، تجزیاتی کام مکمل

0 257

نئے نظام

جسٹس اینڈ ڈیولپمنٹ پارٹی 2019 کے انتخابات تک نئے صدارتی نظام کے حوالے سے بہتر طور پر آگاہی فراہم کرے گی، اس حوالے سے پارٹی کی تجزیاتی کمیٹی 16 اپریل کے ریفرنڈم کے نتائج پر مبنی اپنا تجزیاتی کام مکمل کرچکی ہے،
تجزیاتی رپورٹ کے مطابق عوام کا ریفرنڈم میں ووٹنگ کے عمل میں شولیت کی اہم وجہ صدر ایردوان کی شخصیت پر یقین اور اعتماد ہے،جبکہ صدارتی نظام کے حق اور مخالفت میں پڑنے والے ووٹوں کے درمیان کم مارجن کی وجہ عوام کو نظام کی تبدیلی سے متعلق مناسب آگاہی فراہم نہ کیا جانا ہے،
جسٹس اینڈ ڈیولپمنٹ پارٹی کے 11 اراکین پر مشتمل کمیشن نے ریفرنڈم میں نظام کی تبدیلی کے حوالے بھاری حمایت نہ ملنے پر ملک بھر کے سات ریجنز اور 81 صوبوں میں تحقیق کی، جبکہ استنبول، انقرہ اور اذمیر جیسے بڑے شہروں میں صدارت نظام کے حق میں کم حمایت ملنے پر بھی کمیشن تحقیقاتی رپورٹ مرتب کرچکی ہے،
رپورٹ میں صدارتی نظام کی مخالفت میں پڑنے والے ووٹوں کی بڑی تعداد کو آئینی تبدیلی سے متعلق عوام تک معلومات کی کمی قرار دیا گیا ہے،
صدارتی نظام اپنے نفاذ کے ساتھ ہی بہترین اثرات مرتب کرنا شروع کر دےگا،جس کی منظوری 16 اپریل کو ہونے والے ریفرنڈم میں ہوچکی ہے، اس سلسلے میں جسٹس اینڈ ڈیولپمنٹ پارٹی نے نئے صدارتی نظام کی آگاہی کیلئے موثر مہم چلانے کا منصوبہ بھی طے کر لیا ہے،
16 اپریل کے ریفرنڈم میں متحرک کردار ادا نہ کرنے پر جسٹس اینڈ ڈیولپمنٹ پارٹی کی انتظامیہ میں موجود کچھ آفیشلز تنقید کی ذدمیں آئے ہیں، مقامی انتظامیہ کو متحرک کرنے اور نیا جوش جذبہ پیدا کرنے کیلئے نوجوانوں کو موقع فراہم کرنے پر زور دیا ہے،
صدر ایردوان کا گزشتہ ماہ پارٹی کے صوبائی سربراہوں سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ مقامی انتظامیہ میں تبدیلی کے خواہاں ہیں، تاکہ ایسے افراد کو آگے لایا جائے جو نئے نظام کے حوالے سے بہتر انداز اور نئے جوش وجذبے کے ساتھ اپنی ذمہ داریاں انجام دے سکیں،
صدر ایردوان کا کہنا تھا جن علاقوں سے ہمیں کامیابیاں حاصل ہوئیں ہیں وہاں کی انتظامیہ بدستور اپنا کام جاری رکھیں گی، انہوں نے کہا کہ مقامی انتظامیہ میں جامع تبدیلی کی ضرورت پر ہم سب کا اتفاق ہے،
صدر ایردوان نے صوبائی مشاورتی کونسل کے اجلاس میں کہا کہ ہمارے لئے اصل چیلنج 2019 کے انتخابات ہیں،آپ اندازہ لگا سکتے ہیں کہ ہمیں ریفرنڈم میں 50 فیصد کی حمایت کیلئے کس قدر تگ ودو کرنی پڑی ہے، نتائج سے ظاہر ہوتا ہے کہ آئندہ ہونے والے انتخابات میں کس قدر محنت کی ضرورت ہوگی،
انہوں نے کہا کہ پارٹی میں نئے سرے سے تنظیم سازی کی ضرورت ہے اور اس سلسلے میں ڈرامائی تبدیلیاں ناگزیر ہیں،پارٹی کے سربراہ کی حیثیت سے میں یہ فیصلہ کر چکا ہوں، گاوں اور دیہاتوں میں انتخابات کا آغاز کردیا ہے،جبکہ اگلے مرحلے میں قصبوں اور شہروں میں انتخابات منعقد کیے جائیں گے،

تبصرے
Loading...