‏2020ء کا اختتام آق پارٹی کی تمام الیکشن پولز میں برتری کے ساتھ

0 152

‏2020ء اپنے اختتام کے قریب ہے اور ایک مرتبہ پھر حکمران انصاف و ترقی (آق) پارٹی ترکی کے سیاسی منظرنامے پر غالب سیاسی جماعت کی حیثیت سے موجود ہے کیونکہ گزشتہ ماہ کے تمام الیکشن سروے یہی ظاہر کر رہے ہیں۔

گزشتہ چند ہفتوں میں کئی ریسرچ کمپنیوں نے اپنے پولز جاری کیے ہیں اور سبھی میں آق پارٹی بدستور اپنی حریف جماعتوں سے آگے ہے بلکہ کچھ پولز میں تو اس کو 42.1 فیصد ووٹ ملتے نظر آ رہے ہیں۔

تازہ ترین الیکشن پول کونسینسس ریسرچ کمپنی کی جانب سے پیر کو جاری کیا گیا ہے کہ جو ترکی کے تمام 81 صوبوں میں 5 دسمبر سے 15 دسمبر تک کیا گیا۔ اس میں عوام سے پوچھا گیا کہ وہ کس سیاسی اتحاد کی حمایت کرتے ہیں۔

پول نے پایا کہ آق پارٹی اور ملی حرکت پارٹی (MHP) کا پیپلز الائنس 51.4 فیصد کے ساتھ آگے ہے جبکہ حزب اِختلاف کی جماعتوں جمہور خلق پارٹی (CHP)، اچھی پارٹی (IP) اور سعادت پارٹی (SP) پر مشتمل نیشنل الائنس 48.4 فیصد ووٹ حاصل کرے گا۔

صدر رجب طیب ایردوان نے سنیچر کو اشارہ دیا تھا کہ اگلے انتخابات جون 2023ء میں ہوں گے اور کہا تھا کہ یہ بھی پیپلز الائنس کی فتح کا سال ہوگا۔

دوسری جانب OPTIMAR ریسرچ کمپنی کے ایک پولز نے پایا کہ اگر آج انتخابات ہوں تو آق پارٹی 41.2 فیصد ووٹ حاصل کرے گی جبکہ جمہور خلق پارٹی 23.7 فیصد اور ملی حرکت پارٹی 11.1 فیصد کے ساتھ پیچھے پیچھے ہوں گی۔ اچھی پارٹی 10.9 فیصد اور خلق ڈیموکریٹک پارٹی (HDP) کو 8.4 فیصد ووٹ ملیں گے کہ جو کم از کم 10 فیصد ووٹ حاصل کرنے کی شرط پوری نہیں کرتے یعنی وہ پارلیمان میں نہیں آ سکتی۔

اسی طرح GENAR ریسرچ کمپنی کا نومبر کا ظاہر کرتا ہے کہ آق پارٹی 42.1 فیصد ووٹ حاصل کرنے کی صلاحیت رکھتی ہے جبکہ CHP کو 22.8 فیصد ووٹ ملیں گے۔ سروے ظاہر کرتا ہے کہ MHP اور IP کو کم از کم 10 فیصد سے تھوڑے ہی زیادہ ووٹ ملے ہیں، بالترتیب 10.3 اور 10.1 ہے۔ جبکہ HDP کو صرف 9.7 فیصد۔

میٹروپول ریسرچ کمپنی، ARVARSYA ریسرچ کمپنی اور ORC نے بھی دسمبر کے لیے اپنے سروے کے نتائج ظاہر کر دیے ہیں اور سب کے مطابق آق پارٹی آگے ہے، گو کہ ان نتائج میں اس کے ووٹ 40 فیصد سے کم ہیں۔

تبصرے
Loading...