آذربائیجان نے آرمینیا کے دو سو- 25 طیارے مار گرائے

0 191

آذربائیجان نے جمعرات کو آرمینیا کے دو سو -25لڑاکا طیارے مار گرائے ہیں کہ جو قبادلی کے علاقے میں آذربائیجانی فوج کی پوزیشنوں پر فضائی حملے کرنے کی کوشش کر رہے تھے۔

آذربائیجان کی وزارتِ دفاع نے ٹوئٹر پر بتایا ہے کہ "29 اکتوبر کو دوپہر 1:18 سے 1:20 کے درمیان آرمینیا کی مسلح افواج کے دو سو-25 لڑاکا طیاروں نے قبادلی کے علاقے میں آذربائیجانی افواج کی پوزیشنوں پر حملہ کرنے کی کوشش کی جنہیں آذربائیجان کے ایئر ڈیفنس یونٹس نے مار گرایا۔”

دوسری طرف ایوانِ صدر آذربائیجان نے بتایا ہے کہ "صدر الہام علیف کی ہدایت پر آذربائیجان نے 30 فوجیوں کی لاشیں آرمینیا کے حوالے کی ہیں۔”

الہام علیف کے خارجہ پالیسی مشیر حکمت حاجیف نے صحافیوں کو بتایا ہے کہ "آرمینیا نے اس حوالے سے خیر سگالی ظاہر نہیں کی، لیکن روس کی ثالثی کی وجہ سے وہ ایک انسانی راہداری کھولنے پر رضامند ہوا تاکہ جنگ کے میدان سے آذربائیجانی سپاہیوں کو لاشیں اٹھائی جائیں۔”

آرمینیا کی وزارت دفاع کے ترجمان سوشان ستپنیان نے تصدیق کی ہے کہ آرمینیا آذربائیجانی فوجیوں کی لاشیں واپس کرنے کو تیار ہے۔

27 ستمبر کو نگورنو-قاراباخ میں کشیدگی کے آغاز کے بعد سے آرمینیا بارہا آذربائیجان کی شہری آبادی اور افواج پر حملہ کر چکا ہے اور یہاں تک کہ 10 اکتوبر کو ہونے والے سیزفائر کی بھی بارہا خلاف ورزی کر چکا ہے۔ آذربائیجان کے پراسیکیوٹر جنرل کے دفتر نے کہا ہے کہ اب تک آذربائیجان کے شہری علاقوں پر آرمینیا کے حملوں میں کم از کم 90 شہری جاں بحق اور 392 زخمی ہو چکے ہیں۔ تقریباً 2,406 گھر، 92 عمارات اور 423سرکاری عمارات یا تو تباہ ہو چکی ہیں یا ناقابلِ استعمال ہیں۔

دونوں سابق سوویت ریاستوں کے درمیان تعلقات 1991ء سے کشیدہ ہیں جب آرمینیا کی فوج نے نگورنو-قاراباخ پر قبضہ کر لیا تھا جو بین الاقوامی طور پر تسلیم شدہ آذربائیجانی علاقہ ہے۔

تبصرے
Loading...