‘ترک ہمارا اس طرح خیال رکھتے ہیں جیسے ہم ان کے اپنے بچے ہیں’

0 2,395

بنگلہ دیش کے ایک یتیم خانے کے بچے ترک عوام کی سخاوت پر ان کے شکر گزار ہیں۔

دارالحکومت ڈھاکا کے ایک یتیم خانے کے تقریباً 32 بچوں کی بنیادی ضروریات کے ساتھ ساتھ تعلیمی اور سماجی ضروریات بھی ترک عطیہ کنندگان کی جانب سے پوری کی جا رہی ہے۔

باب الایمان یتیم خانہ چلانےکے اخراجات ترکی کی انسان حق و حریت لری و انسانی یاردیم وقفی (IHH) اور ایسنلر پرائیوٹ دیورن کالج کی جانب سے پورے کیے جا رہے ہیں۔

"ترکی ہماری بہت مدد کرتا ہے۔ وہ (ترک باشندے) ہمارا اس طرح خیال رکھتے ہیں جیسے ہم ان کے اپنے بچے ہیں۔ وہ تعلیم میں ہماری مدد کرتے ہیں اور ہمارے والدین کا کردار نبھاتے ہیں۔” یتیم خانے میں 12 سالہ عبد الاحد نے انادولو ایجنسی کو بتایا۔ ترکی ان کے لیے کتنا اہم ہے، یہ بتاتے ہوئے 12 سالہ فرض الواحد نے کہا کہ اپنے کمرے میں انہوں نے ترک اور بنگلہ دیشی پرچموں کی تصویریں لگائی ہوئی ہیں۔

"ترکی نے ہمیں بتایا کہ ہم تنہا نہیں ہیں۔ ہم ان کے بہت شکر گزار ہیں،” واحد نے کہا اور بتایا کہ ان کا خواب ہے کہ وہ استاد بنیں۔

"میں اپنی تعلیم جاری رکھنا چاہتا ہوں۔ میں ایک انجینئر بننا چاہتا ہوں۔ مجھے امید ہے کہ میرا خواب حقیقت بنے گا۔” ایک اور طالب علم شہادت حسن رفیع نے انادولو ایجنسی کو بتایا۔

تبصرے
Loading...