قوموں کی سب سے بڑی دولت ذہنی اور جسمانی طور پر صحتمند نسلیں ہوتی ہیں، ایردوان

0 739

ترک صدر رجب طیب ایردوان نے استنبول میں فونیکس ایواڑز کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے، "ملکوں کی حقیقی دولت ان کے قدرتی وسائل نہیں ہوتے ہیں۔ مضبوط صنعت، معیشت، تجارت اور فوج رکھنے والا ملک ضروری نہیں کہ مضبوط ملک کہلائے۔ بلاشبہ یہ تمام ضروری اور لازمی ہیں۔ ہر ایک کی اپنی اہمیت ہے۔ تاہم ہماری نظر میں قوموں کی سب سے بڑی دولت نفیساتی، ذہنی اور جسمانی طور پر صحتمند نسلیں ہوتی ہیں”۔

انسانی لحاظ سے کوئی بھی ایسا طریقہ جو صرف مادے پر ہی توجہ مرکوز کرتا ہو اس کی کامیابی کا کوئی امکان نہیں

اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ کوئی ایسا قدم یا پالیسی جو انسانی فیکٹر کو ناپسند یا نظر انداز کرتی ہو اس کا نتیجہ ناکامی ہوتا ہے، رجب طیب ایردوان نے کہا، "انسانی لحاظ سے کوئی بھی ایسا طریقہ جو انسان کو نظر انداز کر کے صرف مادے پر ہی توجہ مرکوز کرتا ہو اس کی کامیابی کا کوئی امکان نہیں۔ ملکوں کی حقیقی دولت ان کے قدرتی وسائل نہیں ہوتے ہیں۔ مضبوط صنعت، معیشت، تجارت اور فوج رکھنے والا ملک ضروری نہیں کہ مضبوط ملک کہلائے۔ بلاشبہ یہ تمام ضروری اور لازمی ہیں۔ ہر ایک کی اپنی اہمیت ہے۔ تاہم ہماری نظر میں قوموں کی سب سے بڑی دولت نفیساتی، ذہنی اور جسمانی طور پر صحتمند نسلیں ہوتی ہیں”۔

ہمارے بچے جتنے صحت مند ہوں گے ہمارے ملک کا مستقبل اس قدر زیادہ روشن ہو گا

صدر ایردوان نے کہا، "ہمارے بچے جتنے صحت مند ہوں گے ہمارے ملک کا مستقبل اس قدر زیادہ روشن ہو گا”۔ مزید کہا کہ "ایسے ملکوں کا مستقبل اندھیرا ہے جو اپنی نسلیں شراب، تمباکو نوشی، جوا اور دہشتگردوں کے ہاتھ ضائع ہونے کے لیے دے دیتے ہیں”۔

شراب اور افیون کو استعماری طاقتوں نے بطور ہتھیار استعمال کیا

اس بات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہ جنوبی ایشیا اور افریقہ سمیت دنیا کے کئی خطوں میں استعماری قوتوں نے شراب اور افیون کو بطور ہتھیار استعمال کیا۔ ترک صدر ایردوان نے بتایا کہ منشیات کی اسمگلنگ مشرق اور مغرب کے درمیان جنگ کا ایک اہم ٹول ہے۔ اس گھٹیا تجارت کے زر مبادلہ سے بغاوتوں کا کھیل کھیلا جاتا، خانہ جنگیں ابھارتی جاتیں اور جمہوری حکومتوں کو دباؤ میں لایا جاتا۔ صدر ایردوان  نے کہا، "کیا آپ جانتے ہیں کہ آج کی دہشتگرد تنظیموں کے زرمبادلہ کا سب سے بڑا ذریعہ کیا ہے؟، جی منشیات کی اسمگنگ ہی سب سے بڑا ذریعہ ہے”۔

تبصرے
Loading...