چین ‘اشتراکی اقدار’ کے مطابق قرآن و انجیل کو دوبارہ لکھے گا

0 2,778

چین منصوبہ رکھتا ہے کہ "کلاسیکی مذہبی کتب” کا یوں ترجمہ کرے کہ وہ کمیونسٹ پارٹی آف چائنا کی اشتراکی اقدار کی عکاسی کریں۔ یہ حکم نومبر میں ایک اجلاس کے دوران دیا گیا کہ جس کا اہتمام نسلی امور کی کمیٹی نے کیا تھا جو ملک میں تمام مذہبی امور کی ذمہ دار ہے۔

گو کہ قرآن و انجیل کا کوئی براہِ راست حوالہ نہیں دیا گیا، لیکن کمیٹی مذہبی کتب پر جامع نظر ثانی کا منصوبہ رکھتی ہے، جو مبینہ طور پر "وقت کے تقاضوں کے مطابق نہیں ہیں” اور انہیں "صدر شی جن پنگ کے دور” کے لحاظ سے ہونا چاہیے۔

کتب کے نظر ثانی شدہ ایڈیشن – بشمول بدھ مت کے ستر – کمیونسٹ پارٹی کے اصولوں کے خلا نہیں ہونے چاہئیں اور ریاست کے مقرر کردہ نکتہ چیں کی جانب سے دوبارہ ترجمہ یا تبدیل کیاجا سکتے ہیں۔

اجلاس میں ماہرین اور نمائندوں کے ایک گروہ کو یہ بتانے کے لیے طلب کیا گیا تھا کہ انہیں "اشتراکیت کی بنیادی اقدار” پر پورا اترنے کے لیے اپنے عقائد کی تفہیم کرنے کی ضرورت ہوگی، سِن ہا نیوز ایجنسی نے بتایا۔

یہ قدم اس موقع پر آیا ہے جب مسلم اویغور باشندوں کے خلاف سخت کارروائیاں جاری ہیں جو مبینہ اصلاحی مراکز میں ہیں۔ امریکی و اقوام متحدہ کے حکام کے مطابق تقریباً ایک لاکھ افراد کو ان مراکز میں اسیر بنایا گیا ہے۔ بیجنگ نے ابتدائی طور پر سنکیانگ میں ان کیمپوں کی موجودگی کی تردیر کی، لیکن اب وہ کہتا ہے کہ یہ "پیشہ ورانہ تربیتی مراکز” ہیں جو دہشت گردی سے نمٹنے کے لیے ضروری ہیں۔

تبصرے
Loading...