بِتلیس میں چغتائی آرٹ ایوارڈز کی تقریب

0 1,955

ترکی کے صوبہ بِتلیس میں ہائی اسکول کے طلبہ نے چغتائی آرٹ مقابلے میں بھرپور حصہ لیا کہ جس کا اہتمام انقرہ میں قائم پاکستانی سفارت خانے نے ترک وزارتِ قومی تعلیم کے تعاون سے کیا تھا۔

مقابلے کا موضوع "پاکستان کی اہم عمارات” تھا۔ گورنر بِتلیس اقطائی چغتائی، قومی وزارتِ تعلیم کے صوبائی ڈائریکٹوریٹ کے سینئر عہدیداران سمیت طلبہ، اساتذہ اور ان کے اہلِ خانہ کی بڑی تعداد نے چغتائی آرٹ ایوارڈز کی تقریب میں شرکت کی۔

ضیاء ارین فائن آرٹس اسکول، بِتلیس کے شاہان تُتگاچ کے فن پارے نے پہلا انعام جیتا، جبکہ اسی اسکول کے مصطفیٰ اوزیل اور ایوب شفلقچی نے بالترتیب دوسرے اور تیسرے انعامات حاصل کیے۔ ارکان درماز، احمد کوتاز اور عبد الصمد تُتکو کے فن پاروں نے "ابھرتے ہوئے مصور” کے زمرے میں اعزازات جیتے جبکہ فرہاد گینش، عبد الخلوق تمیِلدِز اور ہوانور اشک نے "امتیازی” زمرے میں کامیابی حاصل کی۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ترکی کے لیے پاکستان کے سفیر محمد سائرس سجاد قاضی نے چغتائی آرٹ مقابلے کے شرکاء کی صلاحیت، لگن اور تخلیقی قوت کو سراہا اور انعامات و اسناد جیتنے والے طلبہ کو مبارک باد پیش کی۔ انہوں نے بتایا کہ یہ ترکی میں سالانہ مقابلۂ مصوری کا ساتواں ایڈیشن ہے جو پاکستان کے عظیم مصوّر عبد الرحمٰن چغتائی سے موسوم ہے، جو دنیا کے مقبول ترین مصوّروں میں سے ایک تھے۔

سائرس قاضی نے زور دیا کہ ترکی کے مشرقی علاقے میں اِس مقابلے کا انعقاد اور اس میں طلبہ کی جانب سے بڑی تعداد میں شرکت ظاہر کرتی ہے کہ پاک-ترک بھائی چارہ عوام میں کتنی گہری جڑیں رکھتا ہے۔ سفیر نے کہا کہ ایسی تقریبات اور سرگرمیوں کے ذریعے ہم اپنی بیش قیمت روایات نوجوان نسل میں منتقل کرنے کے قابل ہوں گے تاکہ وہ انہیں مزید آگے بڑھائیں۔

گورنر بِتلیس جناب اقطائی چغتائی نے اپنی تقریر میں کہا کہ پاکستان اور ترکی کے برادرانہ تعلقات صدیوں پرانے ہیں۔ انہوں نے بِتلیس صوبے کے طلبہ کی مقابلے میں بڑے پیمانے پر شرکت کو سراہا اور کہا کہ ایسے مواقع نوجوان نسل کو صدیوں پرانی اخوّت اور پاک-ترک تعلقات سے آگاہ کرتے ہیں کہ جو ایسی سرگرمیوں سے مزید بہتر ہوں گے۔

جناب محمد امین کورکماز، ڈائریکٹر، ڈائریکٹوریٹ قومی تعلیم برائے صوبہ بِتلیس، نے اپنے خیرمقدمی کلمات میں چغتائی آرٹ ایوارڈ مقابلے کے بِتلیس میں انعقاد پر پاکستانی سفارت خانے کا شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے بتایا کہ ججوں کے پینل کی جانب سے کل 40 فن پاروں کو حتمی طور پر منتخب کیا گیا تھا اور بالآخر 9 تصاویر نے تین زمروں میں جگہ پائی۔

اپنے دورۂ بِتلیس میں سفیر سائرس قاضی نے گورنر اقطائی چغتائی سے علیحدہ ملاقات بھی کی۔ اس موقع پر بِتلیس اور پاکستان کے درمیان تعلیمی و ثقافتی تعاون کو بڑھانے پر تبادلۂ خیال کیا گیا تھا۔

تبصرے
Loading...