ترکی میں کروناوائرس کے مریضوں کی تعداد 5 ہو گئی

0 290

وزیر صحت فخر الدین خوجہ نے اعلان کیا ہے کہ ترکی میں کرونا وائرس کے مریضوں کی تعداد بڑھتے ہوئے پانچ ہو گئی ہے۔

وزیر انصاف عبد الحمید گل اور وزیر ٹرانسپورٹ جاہد طورخان کے ہمراہ ایک مشترکہ پریس کانفرنس میں فخر الدین نے بتایا کہ تمام متاثرہ مریض ایک دوسرے سے تعلق رکھتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ حکومت ایک خصوصی کروناوائرس ہاٹ لائن وشروع کرنے پر کام کر رہی ہے تاکہ شہری COVID-19 وائرس سے متاثر ہونے کی صورت میں مدد کے لیے اس پر رابطہ کر سکیں۔

طورخان نےبھی بتایا کہ نو یورپی ممالک سے آنے والی پروازیں 17 اپریل تک معطل کر دی گئی ہیں کہ جن میں آسٹریا، بیلجیئم، ڈنمارک، فرانس، جرمنی، نیدرلینڈز، ناروے، اسپین اور سوئیڈن شامل ہیں۔ ترک حکام اس سے پہلے چین، ایران، عراق، اٹلی اور جنوبی کوریا سے پروازوں کی آمد روک چکے ہیں۔ وزارت داخلہ کے ایک اعلان کے مطابق ترکی ان نو ممالک سے تمام سرحدی داخلی راستوں پر مسافروں کی آمد روک دے گا ۔

خوجہ نے ترکی کے دوسرے COVID-19 مریض کا چند گھنٹوں پہلے ہی اعلان کیا تھا "وہ پہلے مریض کا قریبی عزیز ہے۔ ہم نے وائرس کو حد میں رکھنے کے لیے تمام ممکنہ اقدامات اٹھائے ہیں۔ ہم مل جل کر ہی اس مسئلے سے نمٹیں گے۔”

ترکی نے رواں ہفتے ملک میں پہلے مریض کا انکشاف کیا کہ جو حال ہی میں یورپ سے وطن واپس آیا تھا۔ اس مریض اور اس کے اہلِ خانہ کے علاوہ رابطہ رکھنے والے تمام افراد کو بھی الگ تھلگ کر دیا گیا ہے۔

گزشتہ دسمبر میں ووہان، چین میں منظر عام پر آنے کے بعد سے اب تک یہ جدید کروناوائرس اب تک 110 سے زیادہ ممالک تک پھیل چکا ہے۔ عالمی ادارۂ صحت کے مطابق اس وبائی مرض سے اب تک 5,000 سے زیادہ افراد مارے جا چکے ہیں جبکہ تصدیق شدہ مریضوں کی تعداد 1,40,000 ہے۔

تبصرے
Loading...