ویران چوراہے، سنسان گلیاں: کروناوائرس سے متاثرہ دنیا

0 889

کروناوائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے لاک ڈاؤن کی حکمتِ عملی سے دنیا کے چند مصروف ترین مقامات پر پراسرار خاموشی چھا گئی ہے۔ ٹرانسپورٹ کے وہ مراکز کہ جہاں ہر وقت بھیڑ رہتی تھی، جیسا کہ نیو یارک کا گرینڈ سینٹرل اسٹیشن یا استنبول کی امینونو فیری بندرگاہ، اب سب ویران ہیں۔

ہمارے پسندیدہ سیاحتی مقامات یا سیر گاہیں، کیوبا کے دارالحکومت ہوانا میں مالیکون ساحلی علاقہ، القدس میں داخلے کے لیے بابِ دمشق (بالائی تصویر) اور چیک دارالحکومت پراگ میں پرانے شہر کا چوک سب ویران پڑے ہیں، نہ سیاح ہیں اور نہ ہی تاجر، کیونکہ سرحدیں بند ہیں اور سیاح اپنے گھروں میں قید ہیں۔


قاہرہ کا میدانِ تحریر (بالائی تصویر) یا کیف کا میدان، جہاں چند سال پہلے ہی لاکھوں کا مجموعہ انقلاب کے لیے موجود تھا، اب انسانوں سے خالی ہیں۔ دنیا کے ان چند معروف مقامات کی دوپہر میں تصاویر لی گئی ہیں۔


وہ جگہ جہاں سے یہ داستان شروع ہوتی ہے، یعنی چین کے صوبے ہوبی کا شہر ووہان جو دنیا کے دیگر شہروں کی طرح ویران پڑا ہے۔


ایک خاتون لندن کے ویسٹ منسٹر پل کے قریب پارلیمان کے سامنے سے گزر رہی ہیں۔ بدھ تک برطانیہ میں اس وائرس سے ہلاک ہونے والوں کی تعداد 2,000 سے تجاوز کر چکی تھی اور تقریباً 30,000 افراد میں اس مرض کی تصدیق ہو چکی ہے۔ ملک میں اس وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے مکمل لاک ڈاؤن ہے۔


اوپر وینزوئیلا کے دارالحکومت کراکس میں بولیوار ایونیو دیکھیں، 31 مارچ 2020ء کو عین دوپہر 12 بجے یہاں یہ حال تھا۔ ملک میں اب تک کروناوائرس کے 144 مریض سامنے آئے ہیں کہ جن میں سے 3 کی موت واقع ہو چکی ہے۔


برلن، جرمنی کے برینڈن برگ گیٹ کے سامنے لی گئی ایک تصویر۔ جرمنی میں اس وقت 75,000 افراد کروناوائرس سے متاثر ہیں اور جمعرات تک یہاں ہلاکتوں کی تعداد تقریباً 1,000 ہو چکی ہے۔ جرمنی کے 83 ملین باشندے اس وقت نسبتاً نرم لاک ڈاؤن کا سامنا کر رہے ہیں جبکہ ان کے مقابلے میں فرانس اور اٹلی میں بہت سخت لاک ڈاؤن ہے جہاں غیر ضروری طور پر باہر نکلنا سختی سے منع ہے۔


ایک موبائل فون واشنگٹن ڈی سی، امریکا میں واقع یو ایس کیپٹل کی عین دوپہر کی تصویر دکھا رہا ہے۔ امریکا میں صورتِ حال بہت بھیانک ہے کہ جہاں اب تک 2,00,000 سے زیادہ افراد کروناوائرس کے شکار ہو چکے ہیں جبکہ جمعرات تک ہلاک شدگان کی تعداد 5,000 سے تجاوز کر چکی ہے۔

تبصرے
Loading...