ماضی کی عظمت سے حوصلہ پاتے ہوئے ہماری نظریں اب مستقبل پر مرکوز ہیں، صدر ایرودان

0 267

استنبول میں ایک ایوارڈ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صدر ایردوان نے کہا کہ "ماضی کے تلخ و شیریں تجربات سے سیکھتے ہوئے اور اپنی عظمتِ رفتہ سے حوصلہ پاتے ہوئے اب ہماری توجہ مستقبل پر ہوگی۔ گزشتہ 17 سال ظاہر کرتے ہیں کہ ہم نے بحالی، سکون، تجدید کے دور گویا سائنسی سرگرمیوں کے ساتھ ساتھ دیگر شعبوں میں قدم رکھ دیا ہے۔”

صدر رجب طیب ایردوان نے ترویجِ علم فاؤنڈیشن کی تقریبِ اعزازات سے خطاب کیا۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صدر ایردوان نے کہا کہ "ماضی کے تلخ و شیریں تجربات سے سیکھتے ہوئے اور اپنی عظمتِ رفتہ سے حوصلہ پاتے ہوئے اب ہماری توجہ مستقبل پر ہوگی۔ گزشتہ 17 سال ظاہر کرتے ہیں کہ ہم نے بحالی، سکون، تجدید کے دور گویا سائنسی سرگرمیوں کے ساتھ ساتھ دیگر شعبوں میں قدم رکھ دیا ہے۔”

"ترکی شام سے آنے والی مہاجرین کی نئی لہر کو سنبھال نہیں سکتا”

شام میں ہونے والی پیش رفت پر بات کرتے ہوئے صدر ایردوان نے اس امر پر زور دیتے ہوئے کہ ترکی شام سے آنے والی مہاجرین کی نئی لہر کو نہیں سنبھال سکتا، کہا کہ "ادلب کہ جہاں 40 لاکھ لوگ رہتے ہیں، میں حالیہ قتلِ عام نے خطے میں نئی اور بڑی نقل مکانی کو جنم دیا ہے۔ 80 ہزار سے زیادہ ہمارے بہن بھائیوں نے ادلب میں ہونے والی بمباری سے فرار کے لیے ہماری سرحدوں کی جانب ہجرت شروع کردی ہے۔ یہ تعداد بڑھتی ہی رہے گی جبکہ تک کہ ادلب کے عوام کے خلاف مظالم رُک نہیں جاتے۔ اس صورت حال میں ترکی نقل مکانی کا یہ بوجھ تنِ تنہا نہیں اٹھائے گا۔ جس دباؤ کا ہمیں سامنا ہے، اس کی بازگشت تمام یورپی ممالک پر بھی محسوس ہونی چاہیے، سب سے پہلے اور سب سے زیادہ یونان پر۔”

تبصرے
Loading...