صدر ایردوان کی ‘الیکٹرانک سگریٹ’ کے استعمال پر کڑی تنقید

0 1,081

ترک صدر رجب طیب ایردوان نے ‘الیکٹرانک سگریٹ’ کے استعمال پر کڑی تنقید کی ہے- وہ اپنے سگریٹ مخالف موقف کی وجہ سے معروف ہیں-

صدر ایردوان نے استنبول میں انٹرنیشنل ڈرگ پالیسز اینڈ پبلک ہیلتھ سمپوزیم سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ "انہوں نے ایک منفرد قسم کی چیز ایجاد کی ہے جسے ‘الیکٹرانک سگریٹ’ کہتے ہیں- وہ کہتے ہیں اس میں نکوٹین نہیں ہے یا بہت کم ہے- لیکن بہت جلد لوگ اس کے عادی بن جائیں گے”-

انہوں نے کہا کہ سگریٹ کمپنیوں نے ترکی میں سرمایہ کاری کرنے کے لیے حکومت سے رابطہ کیا ہے-

وہ کہتے ہیں کہ وہ 500 ملین ڈالر یا 1 بلین ڈالر کی سرمایہ کاری کریں گے- ہم نے کہا ہے کہ جو وہ یہاں پیدا کریں گے وہ اسے باہر برآمد کریں گے- انہوں نے کہا ہے 10 فیصد پیداوار مقامی طور پر فروخت کرنے کی اجازت دیں- اس بات سے ان کے اصل اہداف معلوم ہو گئے”-

ایردوان نے کہا کہ یہ کمپنیاں نوجوانوں کو عادی بنانا چاہتی ہیں- لیکن "ہم ان کو قطعاً اس کی اجازت نہیں دیں گے”-

انہوں نے توجہ دلائی کہ صرف الکوحل اور سگریٹ کی عادت ہی نہیں نوجوان کے لیے الیکٹرانک آلات کے استعمال کی عادت بھی سنجیدہ خطرہ ہے-

ایردوان نے کہا کہ آج دو سال کا بچہ موبائل کا عادی بن چکا ہے- یہ خطرناک ہے- ہم اس بارے کیا کر سکتے ہیں- ہم اس پر کام کرنا ہوگا-

ترک صدر نے عادت اور دہشتگردی کو ہم پلہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ دہشتگردوں کا سب سے بڑا ذرائع آمدن ڈرگ ٹریڈنگ اور تمباکو اور الکوحل کی اسمگلنگ ہے- اگر ہمیں دہشتگردی کا صفایا کرنا ہے تو اس کے آمدن کے ذرائع کا راستہ روکنا ہو گا-

 

تبصرے
Loading...