ترکی اور روس کے تعلقات کا نیا عہد، ترکی کے پہلے ایٹمی پاور پلانٹ کا افتتاح ہو گیا

0 1,940

روسی صدر ولادیمیر پوٹن جمعرات کے روز انقرہ پہنچے اور ترکی اور روس کی مشترکہ کوششوں سے ترکی کے پہلے ایٹمی پاور پلانٹ کی افتتاحی تقریب میں شرکت کی۔ اس علاوہ وہ کل شام کے معاملے پر سہہ فریقی ملاقات میں بھی شریک ہوں گے۔

Akkuyu پاور پلانٹ کی افتتاحی تقریب ترک صدارتی کمپلیکس میں ہوئی جس میں ترک صدر رجب طیب ایردوان اپنے روسی ہم منصب ولادیمیر پوٹن کے ساتھ شریک ہوئے۔

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے روسی صدر نے کہا کہ ایٹمی پلانٹ ترکی کی معیشت کی ترقی کے لیے ایک نیا قدم ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ پلانٹ کی کامیابی سے ترکی اور روس کی شراکت اور دو ملکوں کی دوستی میں جان پیدا ہو گی۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ترک صدر رجب طیب ایردوان نے کہا کہ ترکی روس کے ساتھ مل کر کئی اسٹریٹجک منصوبے چلا رہا ہے جس میں ایس 400 میزائل ڈیفینس سسٹم، ترک اسٹریم گیس پائپ لائن اور آج Akkuyu پاور پلانٹ کا افتتاح کیا جا رہا ہے۔

صدر ایردوان نے کہا کہ پلانٹ کے چار یونٹ چالو ہو چکے ہیں جو ترکی کی بجلی کی ضروریات کا دس فیصد حصہ پورا کریں گے جس سے ہمارا انرجی لیول بہتر ہو جائے گا جبکہ اس وقت ہم توانائی کی رسد کے لیے تیل، گیس اور کوئلے کو استعمال کر رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ترکی دنیا کی دس بڑی معیشتوں میں داخل ہونا چاہتا ہے اور Akkuyu پاور پلانٹ اس منزل کو حاصل کرنے میں معاون ثابت ہو گا۔

تبصرے
Loading...