ترک صدر ایردوان 14 فروری کو پاکستانی پارلیمنٹ سے خطاب کریں گے

0 1,790

ترک صدر رجب طیب ایردوان جو 13 سے 14 فروری دو روزہ سرکاری دور پر پاکستان جائیں گے، وہ 14 فروری کو پاکستان کی پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کریں گے۔

پاکستان پارلیمنٹ کے اسپیکر اسد قیصر نے بتایا ہے کہ ترک صدر ایردوان کا کسی بھی ملک کی پارلیمنٹ میں مسلسل چوتھی بار خطاب کرنے کا ریکارڈ ہو گا۔

اسد قیصر نے مزید کہا ہے کہ وہ تمام پارٹیوں کے پارلیمانی لیڈرز سے رابطہ کریں گے کہ وہ مشترکہ اجلاس میں حاضری کو یقینی بناتے ہوئے سرکاری مہمان کا احترام کریں گے۔

ترک صدر ایردوان 13-14 فروری کو دو روزہ سرکاری دورہ کریں گے، وزارت خارجہ پاکستان نے اس کی تصدیق کر دی ہے جبکہ ترک وزارت خارجہ نے ابھی تک اس دورے کی باقاعدہ تصدیق نہیں کی ہے۔

اسلام آباد میں بریفنگ دیتے ہوئے دفتر خارجہ پاکستان کی ترجمان عائشہ فاروقی نے کہا کہ "یہ دورہ دو اطراف کے متفقہ شیڈول کے مطابق ہو رہا ہے۔ ہم اس دورہ کے تمام پروگرامات کو فائنل کرنے کے لیے کام کر رہے ہیں”۔

انہوں نے پاکستان اور ترکی کے مابین گرم جوش، برادرانہ اور خوشگوار تعلقات موجود ہیں۔

عائشہ فاروقی نے کہا، "ہم ایک دوسرے کو کئی اہم ایشوز پر سپورٹ کرتے ہیں۔ پاکستان ترک صدر کے دورہ کا انتظار کر رہا ہے۔ اس دورہ کی تفصیلات میڈیا کے ساتھ شئیر کی جائیں گی”

ترک صدر ایردوان نے اپنا گذشتہ دورہ پاکستان نومبر 2016ء میں کیا تھا۔ یہ ان کا کسی ایشیا کی نیوکلئت قوت پاکستان کا بطور صدر پہلا دورہ تھا جس کا حلف انہوں نے اگست 2014ء میں اٹھایا تھا۔ اس سے قبل انہوں نے بطور وزیراعظم ترکی، پاکستان کے دور دورے کئے تھے۔

ترک صدر ایردوان اس سے قبل تین بار پاکستان کی پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاسوں سے خطاب کر چکے ہیں۔

حالیہ ادوار میں پاکستان اور ترکی کے درمیان دفاعی اور سیکیورٹی تعاون اور تعلقات مضبوط ہو چکے ہیں۔ اکتوبر 2018ء میں پاکستان کے پورٹ سٹی کراچی میں ترک کمپنی کے ساتھ مل کر پاکستان کی بحری ضروریات کو پورا کرنے کے لیے 17000 ٹن فلیٹ کا ٹینکر تیار کیا گیا تھا۔

یہ پاکستان کا سب سے بڑا وار شپ تھا جسے کراچی شپ یارڈ میں ترک انجینئرز کے تعاون سے بنایا گیا۔ یہ انجنیئرز ترک ڈیفیس کنٹریکٹرز ایس ٹی ایم کے تحت کام کرتے ہیں۔

جولائی 2018ء میں انقرہ نے ملٹی بلین ڈالرز کا ایک پاکستانی ٹینڈر جیتا جس میں پاکستان نیوی کے لیے چار کوویٹس سپلائی کرنا ہیں۔ ترک وزیر دفاع کے مطابق یہ اس وقت کا ترکی کی تاریخ کی سب بڑی دفاعی ایکسپورٹ ہے۔

2016ء میں ترکی نے پاکستان کو 34 ٹی-37 ائیرکرافٹ گفٹ کئے تھے۔ اس کے علاوہ ترکی پاکستان سے ایم ایف آئی-17 سپر مش شک ائیرکرافٹ خرید رہا ہے۔ اس کے علاوہ پاکستان کی تین سب میرین کی اپ گریڈیشن اور ایک مشترکہ فلیٹ ٹینکر بھی تیار کیا جا رہا ہے۔

تبصرے
Loading...