مسلم نوجوان اپنی صفوں میں اتحاد قائم کریں، صدر ایردوان

0 259

صدر رجب طیب ایردوان نے مسلم نوجوانوں پر زور دیا ہے کہ وہ اپنی صلاحیتوں کو پروان چڑھائیں، ذمہ دارانہ رویہ اختیار کریں اور اِس دور میں اور مغرب کے بڑھتے ہوئے اسلاموفوبیا کے سامنے اپنی صفوں میں اتحاد قائم کریں۔

انھوں نے کہا کہ دہشت گردی، امن و امان کے مسائل اور کووِڈ-19 کی وبا سمیت عالمی صورت حال انسانیت کے لیے سنگین خطرہ ہے اور اس نے مسلم ممالک کو بالخصوص متاثر کیا ہے۔

استنبول میں جاری اسلامک کوآپریشن یوتھ فورم کے چوتھے عام اجلاس کے لیے نشر کردہ خصوصی پیغام میں صدر ایردوان نے کہا کہ "ایک طرف خطے کے مسلمان کشیدگی، ہجرت، غربت اور امراض کی وجہ سے مشکلات سے دوچار ہیں، تو دوسری جانب مغرب میں انھیں بڑھتے ہوئے اسلاموفوبیا کا سامنا ہے۔”

صدر نے مزید کہا کہ مسلمانوں کو اپنے امن و امان اور سلامتی اور بحیثیتِ مجموعی انسانیت کے مستقبل کی ذمہ داری اٹھانے کی ضرورت ہے۔

انھوں نے کہا کہ ترکی عالمی منظرنامے پر ہر ناانصافی پر آواز اٹھاتا رہے گا جیسے ماضی میں کہتا رہا ہے کہ "دنیا پانچ سے کہیں بڑی ہے۔”

انھوں نے مسلم نوجوانوں سے کہا کہ وہ "سامراج” کے بچھائے گئے جال سے بچیں کہ جس کا مقصد انہیں توڑنا اور تقسیم کرنا ہے۔ “ہم آپ کو سیاست، تعلیم، کھیل، تجارت اور سماجی حلقوں میں زیادہ متحرک کردار ادا کرتے دیکھنا چاہتے ہیں۔ کسی کو بھی اپنے اندر نسلی یا ثقافتی بنیادوں پر اختلاف پیدا نہ کرنے دیں۔”

یوتھ فورم استنبول کے گرینڈ جواہر ہوٹل میں دو روز جاری رہے گا۔ فورم کے سربراہ طٰحہ ایہان اجلاس کے بعد فورم کے کام اور حکمت عملی کی رپورٹ اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) کے روبرو پیش کریں گے۔

اس فورم میں 56 رکن ریاستوں کے نمائندے حصہ لے رہے ہیں جو امورِ نوجوانان، معاشی اختیارات، ثقافت، فنون، کھیل اور ماحولیاتی اہداف کا احاطہ کر رہا ہے۔

تبصرے
Loading...