صدر ایردوان کا مہنگائی کو دوبارہ سنگل ڈجیٹ تک کم کرنے کا عزم

0 747

صدر رجب طیب ایردوان نے سوموار کو دئیے گئے اپنے بیان میں کہا ہے کہ ترک حکومت ان شاء اللہ سالانہ مہنگائی کی شرح کو سنگل ڈجیٹ کی سطح تک کم کر دے گی۔ انہوں نے یہ بیان انقرہ میں کابینہ اجلاس کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے دیا۔ مزید کہا کہ انہیں افسوس ہے کہ ہمارے ملک میں مہنگائی 36 فیصد تک جا پہنچی ہیں۔ ہم اسے قابو میں لانے کے لیے ہر طرح کے اقدامات اٹھانے سے گریز نہیں کریں گے۔

انہوں نے کہا، "اس مہنگائی کے باوجود، ایک ایسی حکومت کے طور پر جو افراط زر کو 6 فیصد تک کم کرنے میں کامیاب رہی تھی، ہم ترک شہریوں کو ان کی مالی پریشانیوں سے بچانے کے لیے دوبارہ اپنی کامیابی کو دہرائیں گے،” اس بات کی نشاندہی کرتے ہوئے صدر ایردوان نے مزید کہا کہ حکومت مہنگائی سے لڑنے کے لیے ضروری اقدامات کر رہی ہے۔

صدر ایردوان نے خاندانوں، ورکرز، طلباء اور ریٹائرڈ لوگوں کو امدادی پیکج کے ساتھ اس صورتحال میں مدد کرنے کا عزم ظاہر کیا جس میں گیس کے بلوں اور قیمتوں میں اضافے کے لیے مالی امداد شامل ہو گی۔

صدر نے اس بات پر زور دیا کہ نئے اقتصادی اقدامات کے ذریعے ترک سرکاری ملازمین اور پنشنرز کی مدد کی جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ "سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں کل اضافہ 30.5 فیصد ہو گا اور ہمارے ریٹائرڈ شہری اپنی پنشن میں مہنگائی کی سطح کی بنیاد پر اضافہ دیکھیں گے۔”

انہوں نے کہا، "کسی بھی پنشنر کی تنخواہ 2500 لیرا سے کم نہیں ہو گی”۔

صدر ایردوان نے کرپٹو کرنسی کو معیشت کا حصہ بنانے کیلئے قانون سازی کا اعلان کردیا

دسمبر میں ترکی کی سالانہ افراط زر 19 سال کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی،جبکہ بجلی اور گیس کے بلوں میں بھی سال 2022ء کے لیے اضافہ کر دیا گیا ہے۔ یہ سرکاری اعداد و شمار میں سوموار کو ظاہر کیا ہے۔

ٹرانسپورٹ کی قیمتوں کی وجہ سے صارفین کے استعمال کی باقی اشیاء کی قیمتوں میں بھی اضافہ ہوا، جو سال بہ سال 53.66 فیصد بڑھ گئی، جبکہ کھانے پینے کی قیمتوں میں 43.8 فیصد اضافہ ہوا۔

 

تبصرے
Loading...
%d bloggers like this: