ترک چیریوں کی پہلی بار چین کو فروخت، کاشت کار خوش

0 486

چیری کی پیداوار میں نمایاں ترکی نے بالآخر ترکی کی چین کو برآمدات کی راہ ہموار کردی ہے کہ جو سالانہ 800 ملین ڈالرز کی چیریاں درآمد کرتا ہے۔ ترکی نے رواں سال پہلا درآمدی ویزا پانے کے بعد چین کو 1.4 ملین ڈالرز کی چیریاں برآمد کی ہیں۔ دوسری جانب ہانگ کانگ نے ترکی سے 3.4 ملین ڈالرز کی چیریاں درآمد کی ہیں جو گزشتہ سال کے مقابلے میں 76 فیصد زیادہ ہے۔ خیر الدین اچاق، چیئرمین ایجیئن فریش فروٹ اینڈ ویجیٹیبل ایسوسی ایشن نے کہا کہ انہوں نے وزارت زراعت و جنگلات اور وزارت تجارت کی مدد سے چیری کی برآمدات کی راہ میں عائد رکاوٹیں ختم کردی ہیں ۔ اب ہم اس سال 200 ملین ڈالرز کا ہدف ذہن میں رکھ کر چیری چین برآمد کریں گے۔ چین میں کھانے کی میز پر چیری کی موجودگی خوش حالی کی علامت سمجھی جاتی ہے۔

ترکی نے یکم جنوری سے 10 جولائی تک 65 ہزار ٹن چیری برآمد کی ہے جس سے 155.7 ملین ڈالرز کا زرِ مبادلہ اکٹھا ہوا۔ گزشتہ سال کے اسی عرصے میں 152.2 ملین ڈالرز کی 69 ہزار ٹن چیریاں برآمد کی گئی تھیں۔ ویسے مقدار کے لحاظ سے چیری کی برآمدات میں 6 فیصد کمی آئی ہے لیکن رقم میں اضافہ ہوا ہے۔ موسمی حالات کی وجہ سے برآمد کا سیزن دو ہفتے تاخیر سے شروع ہوا۔ یہی وجہ ہے کہ پچھلے سال کے مقابلے میں اس سیزن کے اختتام تک مقدار اور رقم دونوں کے لحاظ سے اچھے نتائج آنا متوقع ہے۔

ترکی سے چیری کی سب سے زیادہ جرمنی کو ہوئیں جو 77 ملین ڈالرز کی برآمدات کے ساتھ پہلا پہلے نمبر پر رہا۔ روس نے 34 ملین ڈالرز اور نیدرلینڈز نے 8 ملین ڈالرز کی ترک چیریاں درآمد کیں جن کے بعد ناروے، آسٹریا، ہانگ کانگ، ڈنمارک، سوئیڈن، اٹلی اور عراق شامل ہیں۔

تبصرے
Loading...