آزاد شامی فوج کے 25000 مجاہد آپریشن شاخِ زیتون کا ساتھ دے رہے ہیں، کمانڈر

0 1,320

آزاد شامی فوج کے ایک کمانڈر نے اتواز کے روز بتایا ہے کہ 25000 کے قریب مجاہد آپریشن شاخِ زیتون میں شامل ہو رہے ہیں جس کا مقصد آفرین کے عرب ٹاؤن اور دیہاتوں کو کرد پی کے کے کی شامی شاخ وائے پی جی سے آزاد کروانا ہے۔

میجر یاسر عبد رحیم جو آزاد شامی فوج کے مرکزی یونٹ فيلق الشام کے کمانڈر ہیں انہوں نے روسی خبر رساں ادارے کو بتایا ہے آزاد شامی فوج کے جوانوں کا مقصد ٹاؤن کو وائے پی جی دہشتگردوں سے آزاد کروانا ہے۔

انہوں نے کہا، "ہمارا شہر میں داخل ہونے کا منصوبہ صرف اندرون شہر عسکری اہداف کو حاصل کرنا نہیں ہے ہمارا مقصد پورے شہر کو گھیرے میں لے کر یہ یقینی بنانا ہے کہ دہشتگردوں کا صفایا کیا جائے۔ ہم شہر کے اندر نہیں لڑیں گے کیوں ہمیں شہریوں سے کوئی مسئلہ نہیں”۔

میجر عبد الرحیم نے شام سے فون کال پر روسی خبر رساں ادارے کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا، "آزاد شامی فوج کا ہدف یہ ہے کہ روسی فضائی مدد کے ساتھ 16 عرب ٹاون اور دیہاتوں کو حاصل کرے”۔

کرد دہشتگرد تنظیمیں خطے سے نسلی بنیادوں پر عربوں کو شہر بدر کرتی ہیں اور ان کے املاک اور کاروبار پر قبضہ کرتی ہیں۔

ترک زمینی فوج فضائی حملوں کے بعد آپریشن شاخِ زیتون کے سلسلے میں اتوار کے روز شامی شہر آفرین میں داخل ہو گئیں۔ آپریشن کا مقصد شہر کو کرد پی وائے ڈی اور وائے پی جی دہشتگردوں سے آزاد کروانا ہے۔

 

 

تبصرے
Loading...