تیل کا عالمی بحران، ترکی میں دو مہینوں میں فیول کی قیمتوں میں 36 مرتبہ تبدیلی

0 282

کروناوائرس کی وجہ سے عالمی طلب گھٹنے کے بعد تیل کی قیمتوں پر پیدا ہونے والے عالمی بحران سے ترکی میں فیول کی قیمتیں تقریباً روزانہ ہی تبدیل ہو رہی ہیں۔ گزشتہ 51 دنوں میں ملک میں پٹرول اور ڈیزل کی فی لیٹر قیمت میں 36 بار تبدیلی کی گئی ہے۔

مارچ 10 سے اب تک پٹرول کی قیمت میں 24 بار تبدیلی آئی ہے جبکہ ڈیزل کی قیمت 12 مرتبہ تبدیل ہوئی۔ 51 دن کے عرصے میں پٹرول کی قیمت 14 مرتبہ گری جبکہ ڈیزل کی قیمت میں آٹھ مرتبہ کمی آئی۔

قیمت میں تبدیلی کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے انرجی آئل گیس سپلائی اسٹیشنز ایمپلائرز یونین (EPGIS) کے چیئرمین فصیح آق تاش نے کہا ہے کہ قیمتوں میں یہ تبدیلیاں تقریباً دو مہینوں سے ہو رہی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ "گو کہ اوپیک+اجلاس میں قیمتوں میں کمی پر اتفاق کیا گیا لیکن اس عمل کے دوران مصنوعات فروخت نہیں کی گئیں،جن سے ذخیرہ کرنے میں بڑے مسائل کا سامنا کرنا پڑا، پھر بھی قیمتوں میں کمی کا رحجان دیکھنے میں آیا۔” وائرس کی وباء کی وجہ سے طلب میں آنے والی کمی، تیل پیدا کرنے والے بڑے ممالک سعودی عرب اور روس کے مابین ابتدائی عدم اتفاق، نے تیل کی قیمتوں کو بدترین دھچکا پہنچایا۔

ترکی میں پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں آنے والی تبدیلی تین عوامل کی بنیاد پر ہوتی ہے جو بین الاقوامی مارکیٹ میں قیمت، ڈسٹری بیوٹر اور ڈیلر کے مارجن، اور ویلیو ایڈڈ ٹیکس اور اسپیشل کنزمپشن ٹیکس ہیں۔

دریں اثناء، فیول کی قیمتوں میں غیر معمولی کمی نے پٹرول اور ڈیزل کے ذخائر جمع کرنے کا رحجان پیدا کیا ہے۔ فیول ڈسٹری بیوشن کمپنیاں ملک بھر میں اپنے گوداموں میں سستا ڈیزل جمع کر رہی ہیں۔ ترکی میں کُل 102 لائسنس یافتہ اسٹوریج تنصیبات ہیں کہ جن میں کُل 5.2 ملین مکعب میٹرز کی گنجائش ہے۔ ان میں سے 77 فیصد گنجائش بحیرۂ روم اور مرمرہ کے علاقوں میں ہے۔ خبروں کے مطابق یہ ترکی کی چند مہینے کی ڈیزل کھپت کے برابر ہے۔ تیل صاف کرنے والے کارخانوں نے بھی اس عرصے کے دوران 8 ملین مکعب میٹرز تیل کا ذخیرہ کر لیا ہے۔ ترکی کی انڈسٹری 0.7 ملین مکعب میٹر لیکوئیفائیڈ پٹرولیم گیس (LPG) اسٹوریج کی گنجائش بھی رکھتی ہے۔

تبصرے
Loading...