نئے ترک لیرا ڈپازٹس کی کُل قدر 2.24 ارب ڈالرز سے تجاوز کر چکی ہے، صدر ایردوان

0 858

صدر رجب طیب ایردوان نے کہا ہے کہ نئے فارن ایکسچینج پروٹیکٹڈ ترک لیرا ڈپازٹس 23.8 ارب لیرا یعنی 2.24 ارب ڈالرز تک جا پہنچے ہیں۔

ایک ٹیلی وژن انٹرویو میں صدر ایردوان نے کہا کہ "ان لیرا ڈپازٹس میں فوری اضافہ، جو حکومت کی جانب سے کرنسی میں اتار چڑھاؤ کا مقابلہ کرنے اور افراطِ زر کو روکنے کے لیے متعارف کروائے گئے ہیں، ظاہر کرتے ہیں کہ ترک عوام ملک کے نئے معاشی نظام پر اعتماد رکھتے ہیں، جس کی ترجیح نمو، پیداوار، برآمدات اور روزگار کے زیادہ مواقع ہے۔”

صدر نے یہ بھی کہا کہ ان کی حکومت غیر ملکی کرنسی کی قدر میں غیر صحت مندانہ کمی بیشی کا مقابلہ کرنے کے لیے ہر ممکن اقدامات اٹھائے گی۔ "ہمارے شہریوں کو اب دو یقین دہانیاں ہیں: ایک ترک مرکزی بینک اور دوسری ہمارے خزانے سے۔ اس لیے شہریوں کا کوئی نقصان نہیں ہوگا۔ ان شاء اللہ دیگر کرنسیوں کے مقابلے میں ترک لیرا کی قدر جلد حقیقی سطح پر پہنچ جائے گی۔

صدر نے ترکی کی آزاد مارکیٹ کے اصولوں سے وابستگی پر بھی زور دیا اور کہا کہ ترکی کے نئے معاشی نظام کا زور پیداوار اور برآمدات کے حوالے سے کرنٹ اکاؤنٹ سرپلس حاصل کرنا۔

وزارت خزانہ و مالیات نے بھی نئی ڈپازٹ پروٹیکشن اسکیم کے بارے میں نئی تفصیلات پیش کی ہیں جس کا مقصد ملک میں کرنسی بحران کا خاتمہ کرنا ہے۔ وزارت کے بیان کے مطابق ترکی میں مقیم افراد اس اسکیم سے فائدہ اٹھا سکتے ہیں اور اس میں کم سے کم اور زیادہ سے زیادہ کی کوئی حد نہیں ہے۔

وزیر خزانہ و مالیات نور الدین نباتی کا کہنا ہے کہ ترکی کا معاشی ماڈل مثبت نتائج دے گا اور اگلے موسمِ گرما سے پہلے بڑی تبدیلی لائے گا۔

اس اعلان کے ساتھ جمعرات کو ترک لیرا نے گزشتہ دو دہائیوں کی بہترین کارکردگی دکھائی اور ڈالر کو 10.25 ترک لیرا تک گرا دیا جو ایک مہینے کی بہترین سطح ہے۔

تبصرے
Loading...
%d bloggers like this: