حماس دہشتگرد تنظیم نہ فلسطینی دہشتگرد، ساری دنیا اظہار یکجہتی کرتی ہے، ایردوان

0 1,012

ترک صدر رجب طیب ایردوان نے اسرائیلی وزیر اعظم بن یامین نتن یاہو کو جمعرات کے روز ایک یاددہانی نوٹس بھیجا ہے جس میں کہا ہے کہ حماس دہشتگرد تنظیم نہیں ہے اور نہ فلسطینی دہشتگرد ہیں بلکہ یہ مزاحمتی تحریک ہے۔

چھ گھنٹوں میں ٹوئٹر پر اسرائیلی وزیر اعظم کو مخاطب کرتے ہوئے ترک صدر ایردوان نے یہ دوسرا پیغام بھیجا تھا۔ اس سے قبل نتن یاہو نے اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ سے ایردوان کو حماس کا حامی قرار دیا تھا۔

نیتن یاہو نے کہا تھا کہ ایردوان حماس کا سب سے بڑے حامیوں میں سے ہے اور کوئی شک نہیں ہے کہ وہ دہشتگردی اور ذبیحہ کو نہ سمجھتے ہوں۔ میں تجویز کرتا ہوں کہ وہ ہمیں اخلاقیات کی تبلیغ نہ کرے۔

ترک صدر ایردوان نے سخت جواب دیتے ہوئے کہا کہ نیتن یاہو ایک نسل عصبیت پر قائم ریاست کے وزیر اعظم ہیں جو 70 سال سے اقوام متحدہ کی قرار دادوں کی خلاف ورزی کرتے ہوئے نہتے لوگوں کی سرزمین پر غاصبانہ قبضہ کئے ہوئے ہے۔

انہوں نے کہا کہ نیتن یاہو کے ہاتھوں پر فلسطینیوں کا خون ہے جسے وہ ترکی پر حملہ کر کے چھپا نہیں سکتا۔ صدر ایردوان نے مزید کہا کہ اگر وہ انسانیت کا سبق حاصل کرنا چاہتے ہیں تو 10 احکامات خداوندی پڑھیں۔

رجب طیب ایردوان نے اپنے دوسرے ٹوئٹر پیغام میں حماس بارے نیتن یاہو کو جواب دیا۔

پیغام کو "نیتن یاہو کو یاددہانی” کا عنوان دیا گیا اور کہا کہ حماس دہشتگرد تنظیم نہیں ہے اور نہ فلسطینی دہشتگرد ہیں۔

یہ ایک مزاحمتی تحریک ہے جو فلسطینی سرزمین کو غاصب طاقت سے بچاتی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ دنیا ظالموں کے مقابلے میں فلسطینی عوام کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لیے کھڑی ہے۔

تبصرے
Loading...