‏7 لاکھ شامی باشندوں کو ترک تعلیمی نظام کا حصہ بنانا ایک ‘عظیم کامیابی’ ہے

0 287

ترکی کے لیے یورپی یونین کے وفد کے سربراہ نکولاس میئر-لینڈروٹ نے کہا ہے کہ ترکی کی جانب سے 7 لاکھ شامیوں کو ملک کے تعلیمی نظام میں شامل کرنے کی صلاحیت ” کامیابی کی ایک عظیم اور انوکھی داستان” ہے۔

غازی عین تاب میں ایک اسکول کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے میئر-لینڈروٹ نے کہا کہ ترک ریاست اور عوام نے لاکھوں شامی مہاجر بچوں کی تعلیم کے سلسلے میں زبردست کامیابیاں حاصل کی ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ یورپی یونین اپنے سپورٹ پروگرامز کے تحت مدد کرتی ہے لیکن درحقیقت اس کامیابی کا سہرا ترکی کے ساتھ۔

لینڈروٹ نے ذکر کیا کہ یورپی یونین ترکی میں 400 سے زیادہ اسکولوں کے لیے سرمایہ دے چکی ہے، جن میں چلانے کے اخراجات، تربیت اور اساتذہ کا روزگار شامل ہیں۔

ترک حکومت اور خاص طور پر وزارت تعلیم کا شکریہ ادا کرتے ہوئے لینڈروٹ نے تمام طلبہ اور اساتذہ کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کیا۔

غازی عین تاب کے گورنر داؤد گل نے بھی کہا کہ انہوں نے اپنے دورِ حکومت کے آغاز کے بعد ہر ہفتے ایک اسکول کھولنے کا فیصلہ کیا تھا اور رواں سال اب تک 41 اسکول کھل چکے ہیں< انہون نے مزید کہا کہ 54 اسکولوں کی تعمیر جاری ہے جبکہ 2021ء کے اختتام تک کئی تعلیمی ادارے مکمل ہو جائیں گے۔ تعمیرات کے ذمہ دار وزارت کے عہدیدار امید گر نے کہا کہ اسکول جانے کی عمر کے 12 لاکھ شامی ترکی میں مقیم ہیں۔ شام 2011ء کے اوائل سے خانہ جنگی کا شکار ہے جب حکومت نے جمہوریت کے حامی حلقوں کے خلاف زبردست کریک ڈاؤن شروع کر دیا تھا۔ لاکھوں افراد اس خانہ جنگی میں مارے گئے جبکہ اقوام متحدہ کے اندازوں کے مطابق ایک کروڑ سے زیادہ بے گھر ہوئے ہیں۔ ترکی تقریباً 40 لاکھ شامی مہاجرین کی میزبانی کر رہا ہے، جو دنیا کے کسی بھی ملک سے کہیں زیادہ ہیں۔ امید نے کہا کہ پری اسکول کی عمر کے مہاجرین کی آبادی تقریباً 1,27,000 ہے جبکہ پرائمری کے 4,42,000، مڈل کے 3,48,000اور سیکنڈری تعلیم کے 2,78,000 طلبہ پر مشتمل ہے۔ ‏ 33 ہزار یونیورسٹی طلبہکے علاوہ 5 لاکھ سے زیادہ شامی بچے ترکی بھر کے اسکولوں میں داخل ہوئے ہیں۔ ان اسکولوں میں بچے ترک زبان کے علاوہ دیگر مضامین بھی سیکھتے ہیں۔ انقرہ اب تک شامی باشندوں پر 40 ارب ڈالرز خرچ کر چکے ہیں، جبکہ یورپی یونین نے صرف 3 ارب یوروز ادا کیے ہیں حالانکہ وعدہ 6 ارب یوروز کی ادائیگی کا کیا گیا تھا۔

تبصرے
Loading...