بش، اوباما اور ٹرمپ کے ساتھ بخوبی کام کیا، لیکن بائیڈن کے ساتھ آغاز اچھا نہیں، صدر ایردوان

0 539

صدر رجب طیب ایردوان نے موجودہ امریکی صدر جو بائیڈن کے حوالے سے کہا ہے کہ "میں نے جارج ڈبلیو بش، براک اوباما اور ڈونلڈ ٹرمپ کے ساتھ بخوبی کام کیا، لیکن میں بائیڈن کے بارے میں یہ نہیں کہہ سکتا کہ ان کے ساتھ آغاز اچھا ہوا ہے۔”

ترک صدر نے کہا کہ "19 سال برسرِ اقتدار رہنے بعد میں نہیں کہہ سکتا کہ امریکا کے ساتھ ہمارے تعلقات اچھی حالت میں ہیں۔ امریکا کو سمجھنا ہوگا کہ ترکی ایس-400 معاہدے سے قدم پیچھے نہیں ہٹا سکتا۔” وہ روسی ساختہ میزائل ڈیفنس سسٹم کی بات کر رہے تھے جو امریکا اور ترکی کے مابین نزاع کا باعث بنا ہوا ہے۔

افغانستان میں حالیہ پیش رفت پر ترکی کے طرزِ عمل کے بارے میں ایک سوال پر صدر ایردوان نے امریکی ناکامیوں اور صورت حال سے اس کی لا تعلقی کی جانب اشارہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ کیونکہ امریکا نے ترکی سے رائے لیے بغیر اپنا فیصلہ کیا، اس لیے ترکی سے توقع مت رکھے کہ وہ اس کے غیر ذمہ دارانہ رویّے کی قیمت ادا کرے گا۔

صدر ایردوان نے کہا کہ "ترکی کے لیے ممکن نہیں کہ ان (افغان مہاجرین) کے لیے دروازے کھولے اور انہیں قبول کرے۔ ہمارا ملک کوئی کھلی راہداری نہیں ہے۔ اس کسی بھی قدم کی ایک قیمت اور لاگت ہے۔ امریکا ہمیں نہیں کہہ سکتا کہ ‘دروازے کھول دو اور افغانوں کو ترکی میں داخل ہونے دو۔’ اس کی قیمت امریکا کو ادا کرنا ہوگی۔ اس حوالے سے امریکا کو اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے۔”

انہوں نے مزید کہا کہ "بائیڈن شام میں سرگرمِ عمل YPG دہشت گردوں کو اسلحہ فراہم کر رہے ہیں۔” وہ PKK سے منسلک اِس دہشت گرد گروپ کو ملنے والی امریکی پشت پناہی پر بات کر رہے تھے۔ داعش سے لڑنے کے نام پر امریکا نے YPG کو عسکری تربیت فراہم کی اور بھاری فوجی امداد دی، باوجود اس کے کہ نیٹو اتحادی ترکی نے اس پر اپنے خدشات ظاہر کیے۔

شام کے صوبوں حسکہ، رقہ اور دیر الزور کے میں امریکا 11 اڈے رکھتا ہے جو اس وقت YPG کے کنٹرول میں ہیں۔ انٹرپول نے حال ہی میں YPG کے قائد فرہاد ابدی شاہین کے لیے ریڈ نوٹس جاری کیا ہے۔ وہ PKK کے قیدی بانی عبد اللہ اوجلان کے لے پالک بیٹے ہیں، جو اِس وقت ترکی میں عمر قید کاٹ رہے ہیں۔

شاہین کو وائٹ ہاؤس حکام نے واشنگٹن مدعو کیا تھا، باوجود اس کے کہ وہ ایک مطلوب دہشت گرد ہے۔ ترک حکام نے YPG کے خلاف وعدوں میں غلط بیانی اور تاخیر پر امریکا پر تنقید کی تھی۔

تبصرے
Loading...