انڈونیشیا ترکی کے ساتھ دفاعی تعاون مضبوط کرنے کا خواہاں

0 317

ترکی اور انڈونیشیا متعدد دفاعی منصوبوں پر کام کر رہے ہیں جن میں بکتر بند پرسنل کیریئر اور دُور سے چلائے جانے والے ویپن سسٹمز شامل ہیں۔ یہ بات انڈونیشیا کے سرکاری دفاعی ادارے PT Pindad نے بتائی۔

PT Pindad‎ کے انوویشن اینڈ پروڈکٹ ڈیولپمنٹ مینیجر وندو پیرامرتا نے کہا کہ ترکی کی FNSS ڈیفنس انڈسٹری کمپنی اور PT Pindad کے درمیان مشترکہ طور پر بنائے جانے والے کپلان MT ٹینک پیداواری مرحلے تک آ گئے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ انڈونیشیائی مسلح افواج کے لیے اگلے دو سال میں 18 ٹینک بنائے جائيں گے۔

کپلان MT پچھلے حصے میں ایک پاور پیک سے لیس ہے، جو تقریباً 20 ہارس پاور فی ٹن کا پاور-ٹو-وَیٹ تناسب فراہم کرتا ہے۔ انجن اس طاقت کو ڈرائیونگ سسٹم میں منتقل کرتا ہے، جو ایک 6-وِیل، اینٹی شاک سسپنشن سسٹم رکھتا ہے۔

ٹینک کلاس کی یہ گاڑی مزید جدید ٹیکنالوجی پلیٹ فارمز لاتی ہے جو زبردست فائر پاوررکھتی ہے اور میدانِ جنگ کے لیے مینجمنٹ سسٹمز اور لیزر وارننگ سسٹمز سے لیس ہے جو کمانڈر کو اہم سپورٹ فراہم کرتے ہیں۔ اس کے لیے فائر پاور CMI کوکیرِل 3105 گن کی حامل ہے جو ہائی پریشر 105-ملی میٹر کوکیرِل گن اور ایک جدید آٹولوڈر سے لیس ہے۔ اس کی بدولت کپلان MT نسبتاً کم وزن کے باوجود زبردست فائر پاور رکھتی ہے۔

واضح رہے کہ دونوں ممالک اس وقت بکتر بند پرسنل کیریئرز اور دور سے چلائے جانے والے ویپن سسٹمز پر کام کر رہے ہیں۔ پیرامرتا نے کہا کہ کیریئر پروجیکٹ کے پروٹوٹائپ کے لیے ابتدائی ملاقاتیں جاری ہیں۔ دیگر منصوبوں کا ابتدائی کام رواں سال میں مکمل ہو جانا متوقع ہے۔

تبصرے
Loading...