غزہ میں 24 شہادتوں کے بعد اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو کا فوج کو ‘مزید حملے’ کرنے کا حکم

0 2,445

اسرائیل کی جارحیت کو مزید بڑھاتے ہوئے وزیر اعظم بن یامین نیتن یاہو نے کہا ہے کہ انہوں نے فوج کو فلسطین کے محاصرہ زدہ علاقے غزہ پر حملے جاری رکھنے کا حکم دیا ہے۔ ہفتے کے روز سے نیتن یاہو کی حکومت اور فوج کم از کم 24 فلسطینی شہریوں کو شہید اور 154 سے زیادہ کو زخمی کر چکی ہے۔

کابینہ کے ایک اجلاس میں نیتن یاہو نے کہا ہے کہ انہوں نے اسرائیلی فوج کو "غزہ میں اہداف کو نشانہ بنانے کے عمل کو جاری رکھنے” کا حکم دیا ہے جبکہ اسرائیلی فوج "غزہ کے سرحدی علاقے میں مسلح افواج، توپ خانے اور پیدل دستوں کی تعداد کو بڑھا رہی ہے۔”

اسرائیلی کابینہ کا اجلاس غزہ میں موجودہ صورت حال پر گفتگو کے لیے اتوار کو طلب کیا گیا تھا۔

وزارت داخلہ کے مطابق غزہ میں اسرائیلی جنگی جہازوں نے فلسطین کی داخلی سکیورٹی ایجنسی کے صدر دفاتر کو نشانہ بنایا۔

وزارت صحت کے مطابق اتوار کو غزہ میں شہید ہونے والے فلسطینیوں کی تعداد 18 تک پہنچ چکی ہے، جو اسرائیل کے بڑھتے ہوئے فضائی حملوں کا نشانہ بنے۔ وزارت کے مطابق ایک حاملہ خاتون سمیت تین افراد شمالی غزہ میں جبکہ دو جنوبی غزہ میں شہید ہوئے۔ بعد ازاں ایک ہی خاندان کے تین افراد جن میں ایک شیر خوار بچہ بھی شامل تھا، شمالی غزہ میں اسرائیلی حملے کی زد میں آنے کی وجہ سے شہید ہوئے کہ جس کے ساتھ شہداء کی تعداد 20 تک پہنچ گئی۔ عینی شاہدین کے مطابق فضائی حملہ بیت لاہیہ کے علاقے میں ایک کثیر منزلہ عمارت پر کیا گیا تھا۔

اتوار کو جنوبی اسرائیل میں ایک راکٹ حملے میں دو اسرائیلی مارے گئے تھے جبکہ ایک زخمی ہوا تھا۔ اسرائیل کی قومی ایمرجنسی ایجنسی کے میگن ڈیوڈ ایڈم نے بتایا کہ "ایک 40 سالہ خاتون اور ایک 22 سالہ مرد اشکیلون شہر میں ایک راکٹ کے کارخانے پر گرنے کے نتیجے میں ہلاک ہوئے۔ ایک 50 سالہ شخص زخمی ہوا کہ جسے ہسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔”

فلسطینی مزاحمتی گروپوں نے ایک مشترکہ بیان میں اعلان کیا کہ انہوں نے غزہ میں حملے کے ردعمل میں بیر شیبہ اور اشکیلون کو درجنوں راکٹوں کے ذریعے نشانہ بنایا ہے۔ مزاحمتی گروپوں نے اسرائیل کو خبردار کیا کہ وہ ان کے ٹھکانوں کو ہدف بنانے اور ان پر بمباری کرنے سے باز رہے اور عزم ظاہر کیا کہ ان حملوں کا جواب دیا جائے گا۔

فلسطینی وزارت صحت کے مطابق ہفتے کے دن سے اب تک ہونے والے اسرائیلی حملوں میں 24 شہری شہید اور 154 زخمی ہوئے ہیں۔

ہفتے کے دن ہی اس عمارت کو بھی نشانہ بنایا گیا جس میں ترکی کی انادولو ایجنسی کا دفتر واقع ہے۔ اس حملے میں کوئی ہلاکت نہیں ہوئی اور نہ ہی کسی کے زخمی ہونے کی اطلاع ملی ہے۔

غزہ میں کشیدگی اس وقت شروع ہوئی جب جمعے کو اسرائیل نے حماس کے ٹھکانوں پر حملے کیے کہ جن میں ایک نوعمر لڑکے سمیت چار فلسطینی شہید اور 51 زخمی ہوئے اور ساتھ ہی غزہ میں ایک دہائی سے جاری قبضے اور محاصرے کے خلاف ایک فلسطینی ریلی کو بھی الگ سے نشانہ بنایا۔

تبصرے
Loading...