اسرائیل غزہ کے پرامن مظاہرین کے خلاف ممنوع اسلحہ استعمال کر رہا ہے، واچ ڈاگ

0 777

فلسطینی حقوق کے ایک گروپ نے کہا ہے کہ اسرائیلی فورسز، غزہ اور اسرائیلی بارڈر پر پرامن فلسطینی مظاہرین کے خلاف عالمی طور پر ممنوع اسلحہ استعمال کر رہی ہے۔

ایسام یونس جو کہ خود مختار کمشن برائے انسانی حقوق کے سربراہ ہیں کہتے ہیں کہ ، "ہمیں معلومات موصول ہوئی ہیں غاصب اسرائیلی افواج کی طرف سے بین الاقوامی سطح پر ممنوع ہتھیار استعمال کیا جا رہا ہے جس میں دھماکہ خیز گولیاں بھی شامل ہیں۔ جس کا مقصد بڑی تعداد میں زخم پیدا کرنا ہے”۔

یونس کے مطابق، اسرائیلی فوج نے "جان بوجھ کر شہریوں کو براہ راست نشانہ بنا کر ہلاک کیا ہے، جیسا کہ جسم کے اوپری حصے خصوصا سر، گلے اور سینے پر پر متعدد زخموں سے ثابت ہوتا ہے”۔

انہوں نے بین الاقوامی انسانی حقوق کی تنظیموں پر زور دیا کہ وہ اپنی قانونی اور انسانی حقوق کی ذمہ داریوں پوری کریں اور فلسطینی شہریوں کے خلاف اسرائیل کی طرف سے جاری انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کو روکنے کے لئے کام کی کوشش کریں۔

غزہ کی پٹی مشرقی سرحد پر گزشتہ جمعہ کے روز سے اب تک 20 فلسطینی مظاہرین شہید کیے جا چکے ہیں جو اسرائیل کی طرف سے غیر قانونی آباد کاری کے خلاف پر امن مظاہرہ کر رہے تھے۔

تبصرے
Loading...