اسلامی تہذیب کا ذکر کیے بغیر تہذیبوں کی تاریخ مرتب کرنا ناممکن ہے، صدر ایردوان

0 333

پروفیسر فواد سیزغن کے سال کی اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صدر ایردوان نے کہا کہ "اسلامی تہذیب کا ذکر کیے بغیر تہذیبوں کی تاریخ مرتب کرنا ناممکن ہے۔ اس سلسلے میں ترکی قومی اور بین الاقوامی سطح پر سائنس و ٹیکنالوجی میں انقلابی منصوبوں پر کام کر رہا ہے۔”

صدر رجب طیب ایردوان نے استنبول ایئرپورٹ پر جدید سائنس کی بانی– اسلامی سائنس و ٹیکنالوجی کی تاریخ کے عنوان سے منعقدہ نمائش کا افتتاح کیا اور پروفیسر فواد سیزغن کے سال کی اختتامی تقریب سے خطاب کیا۔

"تاریخ ہمیں موقع دیتی ہے کہ اپنے ماضی کو اختیار کرتے ہوئے مستقبل کی تعمیر کریں”

انسانیت کی تاریخ نے موجودہ شکل و صورت جنگوں سے کہیں زیادہ سائنسی ترقی سے پائی ہے، اس کو نمایاں کرتے ہوئے صدر ایردوان نے کہا کہ "تاریخ ہمیں موقع دیتی ہے کہ اپنے ماضی کو اختیار کرتے ہوئے مستقبل کی تعمیر کریں۔ ہم اپنے ذہنوں سے یہ بات کبھی نکلنے نہیں دیں گے کہ ہم ایسی قوم کے رُکن ہیں جس نے ایسی عظیم تہذیب کھڑی کی جو سمرقند سے قرطبہ تک پھیلی ہوئی تھی۔ استنبول، قاہرہ، دمشق اور بغداد جیسے شہریوں کو صدیوں تک سائنس و ثقافت کا مرکز بنانے والی اسلامی دنیا اب بھی ایک حشر برپا کر سکتی ہے۔ ہمارا پیارا استنبول جو ہزاروں سال تک انسانیت کے مجموعی تجربے کا پرچم بردار رہا، مستقبل میں بڑی کامیابیوں کا مرکز بھی بنے گا۔ میں سمجھتا ہوں کہ ہمارے بھائیوں اور بہنوں، بالخصوص بچوں کو اس نمائش کا دورہ کرکے اپنے تہذیب کے تصور کو وسیع ہوتا ہوا دیکھیں گے۔”

"سائنس کو صرف مغرب سے جوڑنا صریح جہالت ہی ہو سکتی ہے”

اس امر پر زور دیتے ہوئے کا آٹھویں صدی سے مسلمان فلسفی اور دانشوروں نے ایسی کثیر شعبہ جاتی تحقیق و جستجو کی جس نے سائنسی سوچ کو پروان چڑھایا اور کامیاب نتائج دیے، صدر ایردوان نے کہا کہ "ماضی کی اور آج کی سائنس کو صرف مغرب سے منسوب کرنا اور مسلمانوں کو جانے انجانے میں نظر انداز کرنا محض جہالت کو ظاہر کرتا ہے۔”

صدر نے گفتگو جاری رکھتے ہوئے کہا کہ "اسلامی تہذیب کا ذکر کیے بغیر تہذیبوں کی تاریخ مرتب کرنا ناممکن ہے۔ اس سلسلے میں ترکی قومی اور بین الاقوامی سطح پر سائنس و ٹیکنالوجی میں انقلابی منصوبوں پر کام کر رہا ہے۔”

تبصرے
Loading...