دیار بکر، روایتی کشیدہ کاری سے ‏15 جولائی کا جذبہ اجاگر کرنے کی کوشش

0 742

‏15 جولائی 2016ء کو گولن دہشت گرد گروپ (FETO) کی بغاوت کی کوشش کو ناکام بنانے کے لیے سڑکوں پر آنے والے افراد کی بہادری اور اپنی جان پر کھیل جانے کو جنوب مشرقی ترکی کے شہر دیار بکر میں کشیدہ کاری کے مختلف کاموں میں ظاہر کیا گیا ہے۔

دیار بکر کے ایڈاونس ٹیکنیکل اسکول فار گرلز کے تقریباً 40 ماہر اساتذہ، جن میں سے بیشتر خواتین ہیں، نے ترک شہریوں کی اپنی آزادی کو برقرار رکھنے اور بغاوت کی کوششوں کے خلاف جدوجہد کو کشیدہ کاری کی صورت میں ڈھالنے کی کوشش کی۔ 15 دن طویل اس منصوبے میں پانچ مختلف ورکشاپس میں کشیدہ کاری میں تانبے کے کام اور چمڑہ سازی کی مقامی تکنیک بھی استعمال کی گئی ہے۔ یہ فن پارے شہدائے 15 جولائی کی یاد میں بنائے جانے والے پل، نیلی مسجد اور ترک پرچم کو پیش کرتے ہیں اور ساتھ ہی سڑکوں پر ہونے والی لڑائی کی بھی تصویر کشی کی گئی ہے۔

ان فن پاروں کی نمائش دیار بکر کے ساتھ ساتھ دارالحکومت انقرہ میں بھی کی جائے گی۔

اسکول کی ڈائریکٹر عائشہ آدی گوزیل کا کہنا ہے کہ امید ہے کہ ہمیں اب کبھی ناکام بغاوت جیسی تاریک رات نہیں دیکھنا پڑے گی۔ جب میں اس کام کو دیکھتی ہیں تو مجھے اندھیرے کے مقابلے میں روشنی کی آمد کا احساس ہوتا ہے۔ ہماری اخلاقی اقدار، ہمارا پرچم، ہمارا ایمان اور ہمارے دلوں کا باہم منسلک ہونا اس کام میں اکٹھا کیا گیا ہے۔

تبصرے
Loading...