آیا صوفیا کی مسجد کی حیثیت سے بحالی کے بعد 15 لاکھ سے زیادہ لوگوں کی آمد

0 162

آیا صوفیا کو دہائیوں کے بعد ایک مرتبہ پھر مسجد میں تبدیل کیا گیا جس کے ساتھ ہی یہاں آنے والے افراد کی تعداد میں کہیں اضافہ ہو گیا ہے۔

استانبول کے مفتی پروفیسر محمد امین مشالی نے بتایا ہے کہ اب تک 15 لاکھ سے زیادہ لوگ اس مسجد میں آ چکے ہیں اور وہ ہر اختتامِ ہفتہ (ویک اینڈ) پر تقریباً 30 ہزار لوگوں کا خیر مقدم کر رہے ہیں۔

یہ مشہور عبادت گاہ ایک گرجے کی حیثیت سے تعمیر کی گئی تھی اور 1453ء میں فتحِ قسطنطنیہ کے بعد عثمانی سلطان محمد فاتح نے اسے ایک مسجد میں تبدیل کر دیا تھا۔ تقریباً 500 سال تک مسجد رہنے کے بعد 1934ء میں اسے عجائب گھر کی حیثیت دے دی گئی۔

10 جولائی کو ایک ترک عدالت نے1934ء کا وہ فرمان کالعدم قرار دے دیا جس کے تحت اس مسجد کو عجائب گھر بنایا گیا تھا۔ اس کے ساتھ ہی آیا صوفیا کی 86 سال کے بعد ایک مرتبہ پھر مسجد میں منتقلی کی راہ ہموار ہوئی۔ 24 جولائی کو جب یہاں دہائیوں کے بعد پہلی بار باقاعدہ نماز ادا کی گئی تو ملک کے طول و عرض بلکہ بیرونِ ملک سے بھی لوگوں کی بڑی تعداد پہنچی تھی۔

مشالی نے بتایا کہ کرونا وائرس کے قواعد و ضوابط کی سختی سے پیروی کی جا رہی ہے اور لوگوں کو چھوٹے گروپوں کی صورت میں مسجد آنے دیا جا رہا ہے۔ "لوگ خود بھی احتیاط کر رہے ہیں اور سماجی فاصلے کے اصولوں کی پیروی کر رہے ہیں۔” البتہ وباء کی وجہ سے آنے والے لوگوں کی تعداد محدود ہے لیکن ایک مرتبہ پھر پابندیاں اٹھ جانے کے بعد اور زیادہ لوگوں کی آمد متوقع ہے۔

تبصرے
Loading...