ترکی کی مساجد وِنڈ ٹربائنز کے ذریعے اپنی بجلی خود پیدا کریں گی

0 336

دو ترک جامعات کا تیار کردہ نیا منصوبہ ترکی کی مساجد کو وِنڈ ٹربائنز کے ذریعے اپنی بجلی خود پیدا کرنے کا موقع فراہم کرے گا۔

طرابزون کی کارادینز ٹیکنیکل یونیورسٹی (KTU) اور قہرمان مراش ستچو امام یونیورسٹی (KSU) نے مسجد کے میناروں اور چھتوں پر عمودی وِنڈ ٹربائنز لگانے کی تجویز دی ہے تاکہ ان عمارتوں کے لیے بجلی پیدا کی جائے۔

KTU کے ٹیکنالوجی ٹرانسفر ایپلی کیشن اینڈ ریسرچ سینٹر میں ماہرِ تعلیم اور اس منصوبے کے شریک سربراہ کریم سون میز نے کہا کہ یہ منصوبہ ترکی کی کئی مساجد کے لیے کارآمد ہوگا۔ "اس وقت مساجد کی ضرورتیں عطیات سے یا سرکاری خزانے سے پوری کی جاتی ہیں۔ اس منصوبے کی واقعی بہت ضرورت تھی۔”

محققین میں KSU کے مکینیکل انجینئرنگ ڈپارٹمنٹ کے سربراہ ڈاکٹر احمد کایا اور ماہرِ تعلیم محمد صفا کامر شامل ہیں جنہوں نے ٹربائنز کے لیے مخروطی شکل کے ڈیزائن تیار کیے ہیں کہ جس کی مدد سے مساجد اپنی بجلی خود پیدا کرنے کے قابل ہو جائيں گی۔

سون میز نے اشارہ کیا کہ یہ سسٹم 2.5 سے 3 کلو واٹ فی گھنٹہ کی بجلی تک پیدا کر سکتا ہے۔ "اگر یہ سسٹم 24 گھنٹے کام کرے تو یہ 40 سے 60 کلو واٹ روزانہ بجلی پیدا کر سکتا ہے۔” انہوں نے مزید کہا کہ یہ وِنڈ ٹربائنز اپنی شکل اور ڈھانچے کی وجہ سے ہر سمت سے ہوا حاصل کر سکتی ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ یہ ہوا کی کم رفتار پر بھی کام کرتی ہیں۔ ہمیں امید ہے کہ یہ منصوبہ ہمارے ملک کے لیے بہت کارآمد ہوگا۔

ایک ورٹیکل ایکسس وِنڈ ٹربائن (VAWT) پوَن چکی کی ایسی قسم ہوتی ہے جس میں مرکزی روٹر شافٹ ہوا کے مقابلے میں ترچھی لگائی جاتی ہے (ضروری نہیں کہ عمودی ہو) جبکہ اہم پرزے ٹربائن کے نیچے ہوتے ہیں۔

تبصرے
Loading...