باسفورس کا سفر ہو تو ترک چائے اور سمِت لازمی ہے

0 1,146

اگر آپ استنبول کی سیاحت کرنے آ رہے ہیں تو کشتی کے ذریعے سفر کا کم از کم ایک بار تجربہ ضرور اٹھانا چاہیے۔ آبنائے باسفورس کو پار کرتے ہوئے تازہ ترک چائے کا گرم کپ اور ساتھ ہی دنیا کی لذیذ ترین خمیری روٹی ‘سمِت’ ہو تو سفر کا لطف دوبالا ہو جاتا ہے۔

ترک چائے

دنیا کے کسی بھی ملک کے مقابلے میں فی کس چائے کا استعمال ترکی میں سب سے زیادہ ہے


لیکن ترک چائے دنیا کے دیگر علاقوں جیسی نہیں ہے


یہ "چائے دان لِک” (çaydanlık) میں بنائی جاتی ہے، جو دراصل ایک دوسرے کے اوپر رکھی جانے والی دو کیتلیاں ہیں


جن گلاسوں میں یہ نکالی جاتی ہے وہ بھی ترک چائے کے لیے خاص گلاس ہیں بلکہ بذاتِ خود فن کا ایک نمونہ ہیں


ترک خمیری روٹی (سمِت)

سمت ایک گول شکل کی روٹی ہے جس پر تِل لگے ہوتے ہیں، یہ bagel اور خطے میں بنائی جانے والی دیگر روٹیوں کی طرح ہوتی ہے


اس پر لگے تِل کے بیج ہی دراصل ذائقہ فراہم کرتے ہیں، لیکن اندر سے نرم و ملائم اور اوپر کافی کڑک اور خستہ ہوتی ہے


ترکی میں سمِت کی تاریخ چائے سے بھی پرانی ہے جو 16 ویں صدی کے اوائل سے جا ملتی ہے


آپ جہاں جائیں گے آپ کو سمِت ملے گی اور زیادہ تر سڑک کنارے تازہ تازہ فروخت کی جاتی ہے


اِس کے ساتھ بہترین مشروب بلاشبہ ترک چائے ہے اور یہ باسفورس کنارے صبح کا بہترین ناشتہ ہے


استنبول کی کشتیاں خوبصورت نظارے، سمِت اور ترک چائے بیچنے والوں کو یکجا کرتی ہیں


یہ کشتیاں باسفورس کنارے واقع شہر کے تمام حصوں سے تقریباً ہر ضلع کے لیے چلتی ہیں


لنگر گاہ پر کشتیوں کے اوقات درج ہوتے ہیں لیکن بشکتاش، اُسکودار، قاضی کوئے، امینونو اور قراکوئے جیسے اہم علاقوں کے لیے تقریباً ہر 15 منٹ میں یا پھر اس سے بھی کم وقت میں کشتیاں چلتی رہتی ہیں


تقریباً ہر لنگر گاہ میں سمِت فروخت ہوتی ہے اور کشتیوں پر بھی چائے پیش کی جاتی ہے


تو سمِت اٹھائیں، کشتی پر سوار ہو جائیں اور لطف اٹھائیں اُن نظاروں کا جو استنبول کے سینکڑوں باسی روزانہ دیکھتے ہیں

تبصرے
Loading...