ترکی میں کورونا وائرس کا کوئی مریض نہیں، وزیر صحت

0 536

وزیر صحت فخر الدین خوجہ نے کہا ہے کہ ترکی میں کورونا وائرس کے کسی مریض کی تصدیق نہیں ہوئی۔ ایک نیوز کانفرنس کے دوران انہوں نے یقین دلایا ہے کہ اگر کسی میں وائرس پایا جاتا ہے تو ہمارے پاس بخوبی نمٹنے کے لیے تمام وسائل موجود ہیں۔

فخر الدین خوجہ نے بتایا کہ چین سے آنے والے 11,000 افراد کی تھرمل کیمروں کی مدد سے جانچ کی گئی ہے اور ان میں کورونا وائرس کا کوئی مشتبہ مریض نہیں پایا گیا۔ انہوں نے کہا کہ ترکی کے مختلف صوبوں میں 68 افراد کے نمونوں کا جائزہ لیا گیا ہے، لیکن یہ سب منفی ثابت ہوئے ہیں۔

وزیر نے کہا کہ چین کے صوبے ووہان سے آنے والا کوئی ترک باشندہ اِس مرض میں مبتلا نہیں، البتہ ووہان سے آنے والے تمام مسافروں اور عملے کے اراکین کو 14 دن تک تنہائی میں رکھا جائے گا تاکہ یقینی بنایا جا سکے کہ وہ کورونا وائرس کے حامل نہیں ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ ایک کارگو طیارہ 34 ترک شہریوں کے انخلاء کے لیے انقرہ سے نکلنے والا ہے۔ یہ ہوائی جہاز اپنے ساتھ 7 آذربائیجانی، 7 جارجیائی اور ایک البانوی باشندے کو بھی لائے گا۔

چین کے شہر ووہان سے نکلنے والا کورونا وائرس مبینہ طور پر جانوروں، خاص طور پر چمگادڑوں، سے انسان میں منتقل ہوا ہے۔ اس نئی وباء سے اب تک چین میں 213 افراد کی موت واقع ہو چکی ہے۔ نیشنل ہیلتھ کمیشن کے مطابق اب تک کورونا وائرس کی وجہ سے نمونیا کے 9,692 مریضوں کی تصدیق ہو چکی ہے۔

وائرس نے دنیا بھر میں خطرے کی گھنٹی بجا دی ہے اور اس کے مریض ایشیا، یورپ، امریکا اور کینیڈا میں بھی پائے گئے ہیں۔

چین سے آنے والے افراد کی دنیا بھر کے ہوائی اڈوں پر جانچ کی جا رہی ہے۔ ترکش ایئرلائنز سمیت کئی فضائی کمپنیوں نے ووہان اور چین کے دیگر علاقوں کے لیے اپنے آپریشنز معطل کر رکھے ہیں۔

عالمی ادارۂ صحت نے بھی ایک ہنگامی اجلاس میں اس وباء کو بین الاقوامی ایمرجنسی قرار دیا ہے۔

تبصرے
Loading...