سیف زون منصوبہ زیادہ بہتر اقدامات کے ساتھ مضبوط کیا جائے گا، قومی سکیورٹی کونسل

0 372

صدر رجب طیب ایردوان کی زیرِ صدارت قومی سکیورٹی کونسل (NSC) کے اجلاس کے بعد جاری کردہ تحریری بیان کے مطابق "اجلاس کے دوران کہا گیا کہ ترکی سیف زون منصوبے کے نفاذ کے لیے اپنی پرخلوص کوششوں میں مزید بہتر اقدامات اٹھائے گا کہ جو شامی مہاجرین کی جلد از جلد اپنے وطن واپسی کو ممکن بنائیں گے اور یہ کہ ترکی اپنی قومی سالمیت کو یقینی بنانے کے لیے کوئی قدم اٹھانے سے دریغ نہیں کرے گا۔”

صدر رجب طیب ایردوان نے ایوانِ صدر میں قومی سکیورٹی کونسل کے ایک اجلاس کی صدارت کی۔

اس موقع پر ترکی کی سالمیت کے حوالے سے اہم مقامی و غیر ملکی پیش رفت پر تبادلہ خیال کیا گیا جس کے بعد NSC کا بیان جاری کیا گیا۔

کونسل کو تمام دہشت گرد تنظیموں، خاص طور پر PKK/PYD-YPG، FETO اور داعش، کے خلاف وطن میں اور بیرونِ ملک لڑائی جاری رکھے گاکہ جو ترکی کے قومی اتحاد اور سالمیت کے ساتھ ساتھ اس کے استقلال کے لیے بھی خطرہ بنے ہوئے ہیں۔ بیان کے مطابق دیگر معاملات پر بھی گفتگو کی گئی۔

اس امر پر زور دیتے ہوئے کہ ہر موقع پر بین الاقوامی برادری کے سامنے ترکی نے اس امر کا اظہار کیا ہے کہ وہ شام کی علاقائی سالمیت اور سیاسی ہم آہنگی کا احترام کرتا ہے اور نئے آئین کے تحت ایک سیاسی حل کا خواہاں ہے، بیان میں کہا گیا کہ : "اس ضمن میں کہا گیا کہ ترکی سیف زون منصوبے کے نفاذ کے لیے اپنی پرخلوص کوششوں میں مزید بہتر اقدامات اٹھائے گا کہ جو شامی مہاجرین کی جلد از جلد اپنے وطن واپسی کو ممکن بنائیں گے، جسے انقرہ ایک انسانی مسئلہ سمجھتا ہے، اور یہ کہ ترکی اپنی قومی سالمیت کو یقینی بنانے کے لیے کوئی قدم اٹھانے سے دریغ نہیں کرے گا۔”

مزید زور دیتے ہوئے کہ PKK/KCK کے خلاف شمالی عراق میں کیا گیا آپریشن کلا ترکی اور عراق کی حفاظت کو یقینی بنانے کے لیے ہے اور علاقے کو دہشت گردوں سے پاک کرنے تک جاری رہے گا، بیان میں کہا گیا کہ "اس پر زور دیا گیا کہ وہ سرگرمیاں جو ترکی براعظمی کناروں پر اپنی سرگرمیاں اقوام متحدہ اور ترک جمہوریہ شمالی قبرص (TRNC) کے ساتھ معاہدوں کے مطابق کر رہا ہے اور پورے عزم کے ساتھ جاری رکھے گا۔ نیشنل سکیورٹی پالیسی ڈاکیومنٹ، جسے ملک، علاقے اور دنیا میں ہونے والی پیش رفت کے حوالے سے ہماری قومی سالمیت پر اثرات کے جائزے کے بعد تیار کیا گیا تھا، پر گفتگو کی گئی اور اس کی منظوری دی گئی۔”

تبصرے
Loading...