سال کے پہلے 8 مہینوں میں 31 ملین غیر ملکی مہمانوں کی ترکی آمد

0 396

وزارت ثقافت و سیاحت کے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق ترکی نے سال کے پہلے 8 مہینوں میں 31 ملین سے زیادہ غیر ملکی مہمانوں کا خیر مقدم کیا۔ ملک میں آنے والے غیر ملکی مہمانوں کی تعداد میں جنوری-اگست دورانیہ میں سالانہ بنیادوں پر 14.7 فیصد اضافہ دیکھنے میں آیا۔ بحیرۂ روم کے کنارے واقع شہر انطالیہ سیاحوں کے لیے مقبول ترین مقام رہا کہ جس نے کل مسافروں میں سے 33 فیصد کی میزبانی کی، یعنی 10.3 ملین کی۔ استنبول کا تاریخی شہر اس عرصے میں 32.2 فیصد یعنی 9.98 ملین غیر ملکی مہمانوں کا میزبان رہا۔ شمال مغربی صوبہ ادرنہ، جو بلغاریہ اور یونان کی سرحد کے ساتھ واقع ہے، تیسرے نمبر پر سب سے زیادہ غیر ملکیوں کا حامل رہا کہ جہاں پہلے آٹھ مہینوں میں 2.99 ملین سیاح آئے۔ روسی 4.8 ملین کے ساتھ آنے والوں میں سب سے زیادہ رہے کہ جن کے بعد جرمن 3.38 ملین کے ساتھ تقریباً 10.9 فیصد رہے۔ برطانوی شہری 1.85 ملین کے ساتھ 5.97 فیصد تھے۔

زیادہ تر غیر ملکی – 20.7 ملین – فضائی راستے سے ترکی میں داخل ہوئے جبکہ 6.1 ملین غیر ملکیوں نے سڑکوں کے ذریعے، 8,90,000 سمندری راستے سے جبکہ 10,475 ٹرینوں کے ذریعے ترکی میں داخل ہونے کا انتخاب کیا۔

پچھلے سال 39.5 ملین غیر ملکی ترکی میں داخل ہوئے تھے جو 2017ء میں 32.4 ملین تھے۔ عالمی ادارۂ سیاحت (UNWTO) کے 2019ء ڈیٹا کے مطابق ترکی سیاحوں کی تعداد کے لحاظ سے دنیا میں چھٹے جبکہ سیاحت سے ہونے والی آمدنی کے لحاظ سے 14 ویں نمبر پر ہے۔

سیاحت ترکی کے لیے آمدنی کا ایک بڑا ذریعہ ہے۔ 2018ء میں تقریباً 29.5 ارب ڈالرز سیاحت کی بدولت ترکی میں آئے۔

ترکی کی نئی سیاحتی حکمتِ عملی 2023ء تک 75 ملین سے زیادہ سیاحوں کی آمد اور سیاحت کے ذریعے 65 ارب ڈالرز سے زیادہ کی آمدنی کا ہدف رکھتی ہے۔

تبصرے
Loading...