وزیراعظم پاکستان نے پاک-ترکی اسٹریٹجک اکنامک فریم وَرک کے لیے پلان آف ایکشن کی منظوری دے دی

0 2,977

وزیر اعظم عمران خان نے سوموار کو ایک اعلیٰ سطحی اجلاس میں پاک-ترکی اسٹریٹجک اکنامک فریم وَرک (SEF) کے لیے تفصیلی پلان آف ایکشن کی منظوری دے دی۔

اسٹریٹجک اکنامک فریم ورک کو حتمی صورت دینے اور اس پر باضابطہ دستخط کے لیے یہ پلان آف ایکشن جلد از جلد ترکی کو پیش کیا جائے گا۔

سیکریٹری اقتصادی اُمور ڈویژن نے پریزنٹیشن کے دوران وزیر اعظم کو بتایا کہ پاکستان اور ترکی کے درمیان دو طرفہ بہتر تعاون کو مضبوط کرنے کے لیے مجوزہ SEF میں زراعت، کم خرچ تعمیرات، سیاحت و ثقافت، سرمایہ کاری و صنعتی تعاون، آٹو انڈسٹری، بینکاری و مالیات، صحت و ادویات سازی، نقل و حمل اور مواصلات، تعلیم و پیشہ ورانہ تربیت، ہوا بازی، آبی وسائل کی ترقی، توانائی و بجلی، سائنس و ٹیکنالوجی، انفارمیشن کمیونی کیشن ٹیکنالوجی، ترقیاتی منصوبہ سازی، ڈاک کی خدمات اور چھوٹے منصوبوں کا نفاذ شامل ہیں۔

فریقین ٹیکسٹائل کے شعبے میں بھی ایک دوسرے کے ساتھ تعاون بہتر بنانے کے لیے رابطے میں ہیں تاکہ بنیادی ڈھانچے کی تعمیر اور کسی تیسرے ملک کو برآمد کرنے کی خاطر بہتر مصنوعات کے لیے مشترکہ منصوبوں کے امکانات تلاش کیے جائیں۔

پاک-ترک اسٹریٹجک اکنامک فریم ورک کو حتمی صورت دینے کی سمت یکساں پیشرفت پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے وزیر اعظم نے SEF پر متحرک انداز میں کام کرنے پر وزیر خزانہ اور سیکریٹری اقتصادی امور ڈویژن کی کوششوں کو سراہا۔

وزیر اعظم نے متعلقہ وزارتوں کو اپنے کام مکمل کرنے کی ہدایت کی تاکہ دستخط کے فوراً بعد SEF کے جلد از جلد نفاذ کو یقینی بنایا جا سکے۔

واضح رہے کہ جنوری 2019ء میں وزیر اعظم کے دورۂ ترکی کے دوران دونوں ملکوں کی قیادت نے پاکستانی و ترک عوام کی فلاح کی خاطر تمام ممکنہ شعبوں میں دو طرفہ تعاون کو بہتر بنانے کے لیے ایک اسٹریٹجک اکنامک فریم ورک (SEF) ترتیب دینے کا فیصلہ کیا تھا۔

قائدانہ وِژن کو ظاہر کرنے کے لیے SEF کا ایک مسودہ وزیر اعظم کی جانب سے منظور کیا گیا جسے فروری 2019ء میں ترک حکومت کے سامنے پیش کیا گیا جس کے بعد گزشتہ ماہ ترکی کی جانب سے تفصیلی جواب ملا۔

اجلاس میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی، وزیر خزانہ اسد عمر، وزیر مواصلات مراد سعید، وزیر منصوبہ بندی مخدوم خسرو بختیار، وزیر ریلوے شیخ رشید احمد، وزیر بجلی عمر ایوب، مشیر تجارت عبد الرزاق داؤد، چیئرمین بورڈ آف انوسٹمنٹ ہارون شریف اور متعلقہ وزارتوں کے سینئر عہدیداروں نے شرکت کی۔

تبصرے
Loading...