ترکی اور پاکستان، نئی قیادت کے ساتھ تعلقات کی نئی منزلوں پر پہنچنے کیلئے پراعتماد

0 1,077

وزیراعظم عمران خان کا دو روزہ دورہِ ترکی اختتام پذیر ہوا- رنجشیں اور شکوؤں کی برف بہت حد تک پگھل گئی ہے اور اعتماد بحال ہوا ہے-

اگرچہ پاکستان کے سیاسی و معاشی حالات کو دیکھتے ہوئے ترکی اپنی ترجیحات بدل چکا تھا- بھارتی مارکیٹس تک رسائی آق پارٹی کے منشور میں شامل ہے- عمران خان کا انقرہ میں استقبال کرنے والی وزیر تجارت رخسار پیکجان نے دو ہفتے قبل کہا تھا کہ 2019ء میں بھارت کے ساتھ تجارت متوازن سطح پر لانے کے لیے ترک کمپنیوں کے لیے بھارتی مارکیٹس میں اہداف رکھیں گے- ترک صدر ایردوان نے بھارتی وزیر اعظم کو سالِ نو کا خط لکھا لیکن پاکستانی وزیر اعظم کو لکھنے کی ضرورت محسوس نہ کی گئی-

انقرہ پہنچنے اور سربراہان مملکت کی ملاقات کے آغاز پر آنے والی باڈی لینگوئج، بداعتمادی کا اظہار کر رہی تھیں- لیکن ملاقات حوصلہ افزاء رہی اور ایک دوسرے پر اعتماد مشترکہ پریس کانفرنس میں نظر آتا ہے-

ماضی بنتی بداعتمادی بارے جب بھی بات کی جاتی ہے تو سمجھا یہ جاتا ہے کہ ترک صدر ایردوان، وزیراعظم عمران خان سے خفا ہیں کہ انہوں نے پارلیمنٹ کے اجلاس میں شرکت نہیں کی تھی جس میں وہ خطاب (نوازشریف کے حق میں نہیں) کر رہے تھے- اس سے قبل تو وہ ان کے لیے تحائف بھیجتے تھے- دوسری طرف عمران خان کی بداعتمادی کی وجہ یہ غلط فہمی تھی کہ ترک صدر ایردوان کے نواز شریف اور شہباز شریف سے ذاتی تعلقات ہیں جس کی وجہ سے وہ ان کی ہر سطح پر مدد کرنا چاہتے ہیں- اسی کو لے عمران خان کے حامیوں نے مختلف قسم کی کہانیاں بھی پھیلائیں اور ترک صدر پر بہتان تراشی بھی کی اور ابھی تک یہ سمجھ رہے تھے کہ ایردوان نے کسی ڈیل کے لیے بلایا ہے-

اس بداعتمادی میں ترکی کا نقصان زیادہ تھا کیونکہ پاکستان میں ترک کمپنیوں کی انویسٹمنٹ ہے اور موجودہ پاکستانی حکومت سے کسی قسم کی بھی توقع رکھی جا سکتی تھی کہ وہ ترک کمپنیوں کو سیاسی مہم جوئی کا نشانہ بنا دیں- اس لیے وہ چاہتے تھے کہ رنجشوں کی فضا جلد چھٹے- ترک صدر ایردوان نے خود دورے کی دعوت دی- اور آج اعتماد کے ساتھ ترکی اور پاکستان آگے بڑھنے کو تیار ہیں- فری ٹریڈ معاہدہ پر کام کا آغاز ہو رہا ہے- عمران خان بھی صحت، عدلیہ اور تعلیم کے شعبوں میں ترک ماڈل سے متاثر ہوئے ہیں اور اپنانے کی خواہش کا اظہار کیا ہے- امید نظر آ رہی ہے کہ پاکستان اور ترکی کے پُرجوش تعلقات اعتماد کے ساتھ نئی منزلوں پر پہنچیں گے-

تبصرے
Loading...