‏15 جولائی کی ناکام بغاوت کے پانچ سال مکمل، وزیر اعظم پاکستان کا ترکی کے ساتھ اظہارِ یکجہتی

0 1,013

وزیر اعظم پاکستان عمران خان نے ترکی میں 15 جولائی کی ناکام بغاوت کے پانچ سال مکمل ہونے پر ترکی کے ساتھ اظہارِ یکجہتی کیا ہے۔

ترک صدر رجب طیب ایردوان کے نام اپنے پیغام میں عمران خان نے کہا ہے کہ "پاکستان کی حکومت اور عوام کی جانب سے میں ‘یوم جمہوریت و قومی اتحاد’ پر اپنے برادر ملک ترکی کے عوام اور حکومت کے ساتھ اظہارِ یکجہتی کرنا چاہتا ہوں۔”

جاری کردہ بیان میں عمران خان نے کہا ہے کہ "تاریخ یاد رکھے گی کہ پانچ سال پہلے اس دن ترک عوام نے کس مثالی دلیری اور جرات مندی کے ساتھ ان عناصر کا مقابلہ کیا کہ جو ترکی کے امن و استحکام اور اس کے جمہوری اداروں کو ہدف بنانا چاہتے تھے۔”

"یہی وہ دن تھا جب پوری پاکستانی قوم ترکی کی جمہوریت اور ترقی کی راہ میں روڑے اٹکانے کے خلاف یک آواز تھی۔”

عمران خان نے کہا کہ "آج پاکستان کے عوام ان شہیدوں اور ان کے اہل خانہ کے ساتھ اظہارِ یکجہتی میں ترکی کے عوام کے ساتھ ہیں۔”

انہوں نے مزید کہا کہ "پاکستان اور ترکی کے مابین بے مثال تاریخی، برادرانہ اور کثیر جہتی تعلقات ہیں اور یہ ہر وقت کی آزمائش پر پورے اترے ہیں۔ پاکستان کے عوام اور حکومت ترکی کے عوام اور حکومت کی سلامتی، امن و استحکام کے لیے کوششوں کی بھرپور حمایت کا اعادہ کرتے ہیں اور مشترکہ اہداف کے حصول کے لیے ہمیشہ کی طرح اُن کے شانہ بشانہ رہیں گے۔”

وزیر اعظم پاکستان نے کہا کہ "ترقی و خوشحالی اور شان و شوکت کی جانب سفر میں ہماری دعائیں اور نیک خواہشات آپ کے اور ترکی کے عوام کے ساتھ ہیں۔”

FETO اور اس کے امریکا میں مقیم سربراہ فتح اللہ گولن نے 15 جولائی 2016ء کی ناکام بغاوت کی قیادت کی تھی کہ جس میں 256 افراد شہید اور 2,734 زخمی ہوئے تھے۔

دہشت گرد گروپ پر عرصہ دراز سے ترک اداروں، خاص طور پر فوج، پولیس اور عدلیہ میں نفوذ اختیار کر کے ریاست کا تختہ الٹنے کی مہم چلانے کا الزام ہے۔

تقریباً دو دہائیوں کے بعد ترکی میں بغاوت کی یہ پہلی کوشش تھیں، جس میں FETO کے گھس بیٹھیے عناصر نے اقتدار پر قبضہ کرنے کی کوشش کی تھی۔ یہ کوشش عوام کی مثالی مزاحمت کی بدولت ناکام ہوئی۔

تبصرے
Loading...