کرد دہشتگرد گروہ ‘پی کے کے’ نے ترکی میں آگ کے واقعات کی ذمہ داری قبول کر لی

0 2,626

کرد دہشت گرد گروہ ‘پی کے کے’ کے "چلڈرن آف فائر انیشیٹو” گروپ نے ترکی میں حالیہ آگ کے واقعات کی ذمہ داری قبول کر لی ہے۔ ذمہ داری قبول کرنے والے بیان میں کہا گیا ہے کہ کیونکہ ترک ریاست کوئی دوسری زبان نہیں سمجھتی، وقت آ گیا ہے کہ اسے آگ کے سیلاب کے ذریعے گھٹنوں پر لایا جائے”۔

کردستان ورکرز پارٹی (پی کے کے) کرد باغیوں کا ایک دہشتگرد گروہ ہے جو کئی سالوں سے ترکی کے خلاف دہشتگردی کے واقعات میں ملوث رہا ہے اور ہزاروں ترک شہری اس کا نشانہ بن چکے ہیں۔ تاہم یہ گروہ سیاسی طور پر کردوں کی نمائندگی نہیں کرتا ہے۔ یہ گروہ فاشسٹ کمونسٹ نظریات رکھتا ہے۔ ترکی کے علاوہ امریکہ اور یورپی یونین بھی اسے دہشتگرد گروہ تسلیم کر چکی ہے۔

ترکی کے جنوبی علاقوں میں موجود جنگلات میں جیسے ہی جمعرات کے روز آگ کے واقعات سامنے آئے، سوشل میڈیا پر ترک عوام نے پی کے کے پر انگلیاں اٹھانی شروع کر دی تھیں اور ان واقعات میں "آگ لگانے والے بچے” کو ذمہ دار قرار دیا کیونکہ آگ پر ‘پی کے کے’ حامی طبقات نے خوشی کا اظہار کرنا شروع کر دیا تھا۔ ‘پی کے کے’ ترکی کے جنگلات کو آگ لگانے کو بطور ہتھیار استعمال کرنے کی طویل تاریخ رکھتی ہے جس میں ماحولیاتی نقصان کے ساتھ ساتھ کئی شہری جان سے ہاتھ دھو چکے ہیں۔ آتشزدگی کے تسلسل سے سامنے آنے والے واقعات کے بعد ترک شہریوں نے حالیہ واقعات کے پیچھے بھی ‘پی کے کے’ کے ملوث ہونے کا شبہ ظاہر کیا تھا۔ ‘پی کے کے’ کی اس آگ جلاؤ مہم کے اس سے قبل ہونے والے واقعات کی وہ ذمہ داری قبول کرتے آئے ہیں اس لیے وہ حالیہ واقعات کے لیے سب سے بڑے ملزم قرار دئیے جا رہے تھے۔

 

تبصرے
Loading...