انقرہ 2011ء بم دھماکے میں مطلوب PKK دہشت گرد دیاربکر سے گرفتار

0 238

دارالحکومت انقرہ میں 2011ء میں ہونے والے ایک کار بم دھماکے میں ملوث ایک PKK دہشت گرد کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔

صرف اپنے نام کے ابتدائی حروف I.A. سے شناخت کردہ یہ مشتبہ شخص مشرقی صوبہ دیاربکر میں اپنے والد کے گھر میں تھا، جب اسے گرفتار کیا گیا۔

اس پر 2011ء میں دارالحکومت انقرہ میں ایک کار بم دھماکے کا الزام ہے۔ 20 ستمبر 2011ء میں انقرہ کے قزل اے چوک پر ہونے والے اس بم دھماکے میں تین افراد مارے گئے تھے اور 34 زخمی ہوئے تھے۔

ترکی کے خلاف اپنی 40 سالہ دہشت گردی پر مبنی جدوجہد میں PKK تقریباً 40 ہزار لوگوں کی اموات کی ذمہ دار ہے کہ جن میں عورتیں، بچے اور شیرخوار بھی شامل ہیں۔یہی وجہ ہے کہ یہ تنظیم ترکی کے علاوہ امریکا اور یورپی یونین کی جانب سے بھی دہشت گرد قرار دی جا چکی ہے۔

ملک کے اندر اور سرحدوں پر امن و امان کو خطرے سے دوچار کرنے والے PKK دہشت گردوں کے خاتمے کے لیے شمالی عراق میں آپریشن کلا اور ترکی میں آپریشن کرن جیسے فوجی آپریشنز جاری ہیں۔

ترکی افواج مشرقی اور جنوب مشرقی صوبوں میں دہشت گردی کے خلاف آپریشنز کرتی رہتی ہے کہ جہاں PKK اپنے گڑھ بنانے میں مصروف رہتی ہے۔ ترک مسلح افواج نے شمالی عراق میں سرحد پار آپریشنز بھی کیے ہیں کہ جہاں PKK دہشت گردوں نےاپنے ٹھکانے بنا رکھے کہ جہاں سے وہ ترکی پر حملے کرتے ہیں۔

تبصرے
Loading...