ہمیں اپنی پولیس کو عوام کے ساتھ ہم آہنگ کرنا چاہیے، ایردوان

0 170

پولیس اور شہری دفاعی دستوں میں موٹر سائیکل تقسیم کرنے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صدر رجب طیب ایردوان نے کہا: "سیکیورٹی فورسز کی طاقت ہتھیاروں اور اختیارات سے نہیں، عوام کے دلوں میں موجودگی سے ماپی جاتی ہے۔ اگر ہماری عوام سیکیورٹی فورسز کو گلے لگائیں اور ان کی ڈیوٹی بہتر طریقے سے سر انجام دینے میں مدد کریں تو کم کوششوں سے ہم زیادہ بہتر نتائج حاصل کر سکتے ہیں”۔

ہم اپنے شہیدوں کے خون کا بدلہ لیے بغیر نہیں جانے دیں گے
 
"ہم اپنے شہیدوں کے خون کا بدلہ لیے بغیر نہیں جانے دیں گے۔ہم نے دہشتگردوں کا جواب دیا ہے اور انہیں ختم کرنے کے لیے یکسو ہیں۔” صدر ایردوان نے مزید کہا: "کسی کو حق نہیں ہے کہ اس قومی امن کو نقصان پہنچائے۔ کوئی اس قوم کے وقار کی بے احترامی اور اس ملک کو تقسیم نہیں کر سکتا۔ اس لیے کہ ہم اپنے ‘ایک قوم، ایک جھنڈا، ایک وطن اور ایک ریاست’ کے اصول میں ذرا بھر بھی رعایت پیدا نہیں کریں گے۔ہم اس قوم کو تقسیم کرنے ، تڑنگا نما جھنڈا لہرانے، اس ملک کو بھولنے اور ریاست کے اندر ریاست بنانے کی اجازت نہیں دیں گے۔ ہم ایسی کوششیں روکنے کے لیے پُر عزم ہیں”۔
منشیات کے خلاف جنگ کا عزم
"سیکیورٹی فورسز کی طاقت ہتھیاروں اور اختیارات سے نہیں، عوام کے دلوں میں موجودگی سے ماپی جاتی ہے۔ اگر ہماری عوام سیکیورٹی فورسز کو گلے لگائیں اور ان کی ڈیوٹی بہتر طریقے سے سر انجام دینے میں مدد کریں تو کم کوششوں سے ہم زیادہ بہتر نتائج حاصل کر سکتے ہیں”۔ رجب طیب ایردوان نے مزید کہا: ” تاریخ کے اس نازک موڑ جس سے ترکی گزر رہا ہے۔ دہشتگردی کے خلاف جنگ کے علاوہ شہری دفاع، نارکاٹکس ڈرگز، اسمگلنگ، منتظم جرائم جیسے مسائل میں ہمیں اپنی پولیس اور شہری دفاعی دستوں کو عوام سے ہم آہنگ کرنا چاہیے۔ مجھے یقین ہے کہ اس کے بعد مختصر عرصے میں اپنے گلیوں اور سڑکوں کو جرائم پیشہ افراد سے صاف کر لیں گے۔ اسکول جلد کھلیں گے۔ مجھے یقین ہے کہ ہماری سیکیورٹی فورسز بڑے پیمانے پر آپریشنز کے ذریعے ان گندگی کے ماروں کو انصاف کے کٹہرے میں کھڑا کر دیں گے جو اسکولوں اور یونیورسٹیوں کے اردگرد منشیات فروشی کرتے ہیں۔ کیونکہ وہ ہمارے بچوں کے قاتل ہیں”۔
تبصرے
Loading...