کروناوائرس کے خلاف جنگ، صدر ایردوان کا ترکک کونسل کے وڈیو کانفرنس اجلاس سے خطاب

0 281

صدر رجب طیب ایردوان نے COVID-19 کے خلاف جاری جدوجہد میں باہمی تعاون اور اتحاد کے لیے ترکک کونسل کے غیر معمولی وڈیو کانفرنس اجلاس میں شرکت کی۔

اجلاس سے اپنے خطاب میں صدر ایردوان نے کروناوائرس کی وباء سے نمٹنے کے لیے ترکک کونسل کے اقدامات کو سراہا اور وڈیو کانفرنس اجلاس کو ممکن بنانے پر آذربائیجان کے صدر الہام علیف کا شکریہ ادا کیا۔

اس امر پر زور دیتے ہوئے کہ اِس وقت پوری انسانیت ایک اَن دیکھے دشمن کے خلاف لڑ رہی ہے، صدر ایردوان نے کہا کہ ترکک کونسل کا غیر معمولی وڈیو کانفرنس اجلاس کرونا وائرس کی وباء کے خلاف جاری جدوجہد میں اِن ملکوں کے مابین اتحاد کو بہتر بنائے گا۔

اس یقین کا اظہار کرتے ہوئے کہ ترک دنیا اس مشکل دور سے فاتحانہ طور پر اُبھرے گی، صدر ایردوان نے COVID-19 میں جان دینے والوں کے لیے اللہ سے مغفرت طلب کی اور اُن کے رشتہ داروں سے تعزیت کا اظہار کیا۔

"ہم اپنی بہنوں اور بھائیوں کے شانہ بشانہ کھڑے ہوں گے”

صدر ایردوان نے کہا کہ "جس دن سے یہ وائرس پھیلنا شروع ہوا ہے، تب سے ہی ترکی نے فوری اور ضروری اقدامات اٹھائے۔ پچھلے 17 سالوں میں صحت کے شعبے میں جو سرمایہ کاری کی گئی، اس کی وجہ سے ہم نے الحمد للہ اس وبائی مرض کا مقابلہ پوری تیاری کے ساتھ کیا ہے۔ ہمیں صحت کی مصنوعات کی پیداوار اور رسد کے حوالے سے کسی بڑے مسئلے کا سامنا نہیں۔ اپنی ضروریات پوری کرنے کے ساتھ ساتھ ہم اپنے تمام ذرائع کا استعمال کرتے ہوئے اپنے بہنوں اور بھائیوں کے ساتھ کھڑے ہونے کے لیے بھی کام کریں گے۔”

ترکک کونسل کے اراکین کی درخواستوں کو ترکی ترجیح دے رہا ہے، یہ کہتے ہوئے صدر ایردوان نے کہا کہ "مجھے خوشی ہے کہ کونسل کے اراکین کے مابین تعاون اور اتحاد باقاعدہ نظر آتا ہے۔ اسی لیے ترکک کونسل زیادہ مؤثر باہمی تعاون سے پہلے ہی ایک کارآمد پلیٹ فارم ثابت ہو چکی ہے۔”

"عالمگیر وباء کے نتیجے میں ہم ایک عالمی سماجی و معاشی بحران کا سامنا کر رہے ہیں”

عالمگیر وباء کے نتیجے میں دنیا کو اب ایک عالمی سماجی و معاشی بحران کا سامنا ہے، یہ کہتے ہوئے صدر نے کہا کہ "ہمیں جلد از جلد ٹرانسپورٹیشن، کسٹمز اور بارڈر کراسنگ جیسے شعبوں میں عملی حل پیش کرنا ہوں گے۔ بین الاقوامی تجارت اور کارگو ٹرانسپورٹیشن کو برقرار رکھنے کے لیے سپلائی چَین کا تسلسل بہت اہم ہے۔”

صدر ایردوان نے مزید کہا کہ "ان حالات میں ایک مرتبہ پھر ٹرانس-کیسپیئن مڈل کوریڈور کی اہمیت ثابت ہوئی ہے۔ ہمیں نان-کانٹریکٹ فارن ٹریڈ اور اسی طرح ملٹی موڈل ٹرانسپورٹ سسٹم کے لیے مضبوط اقدامات اٹھاتے ہوئے باہمی تعاون کو بہتر بنانا ہوگا۔ ہم ترکی، آذربائیجان اور جارجیا کے درمیان ریلوے فریٹ ٹرانسپورٹیشن کو وسطِ ایشیا تک پھیلا سکتے ہیں۔ ہم باکو-طفلس-کارس لائن پر 3500 ٹن کے اضافی لوڈ کی ٹرانسپورٹیشن کے لیے کام کر رہے ہیں۔”

"ہمیں عالمگیر وباء کے بعد آنے والے وقت کے لیے تیار رہنا ہوگا”

صدر ایردوان نے مزید کہا کہ "ہم ان شاء اللہ کروناوائرس کے خلاف جنگ جیت لیں گے۔ اور تب ہمیں ایک نئی دنیا کے حقائق کا سامنا کرنا ہوگا۔ اس لیے ہمیں عالمگیر وباء کے خلاف اپنی جدوجہد جاری رکھنے کے ساتھ ساتھ آئندہ وقت کے لیے بھی تیاری کرنا ہوگی۔ ہمیں طبی تعاون، تجارت، معیشت اور سماجی نفسیات کے لیے ایک جامع اپروچ اپنانی ہوگی، جس میں تعاون کے ممکنہ شعبوں کی شناخت کرنا اور ضروری اقدامات فوری طور پر اٹھانا شامل ہے۔ اس حوالے سے میں اپنے نیشنل ایمرجنسی سینٹرز کے مابین ایک کوآرڈی نیشن میکانزم کے نفاذ کی تجویز دوں گا تاکہ وہ عالمگیر وباء سے جڑے مسائل کے لیے حل تلاش کریں، معلومات اور تجربات باہم شیئر کریں اور عالمگیر وباء کے حوالے سے حکمتِ عملیاں تیار کریں۔ایسے اقدامات ہماری کونسل کو زیادہ نمایاں کریں گے اور علاقائی و عالمی سطح پر زیادہ بااثر بنائیں گے۔”

تبصرے
Loading...