مشرقی بحیرۂ روم، صدر ایردوان اور نیٹو سربراہ کے مابین فون رابطہ

0 155

صدر رجب طیب ایردوان اور نیٹو کے سیکریٹری جنرل جینس اسٹولٹن برگ میں بذریعہ ٹیلی فون رابطہ ہوا ہے۔ انہوں نے مشرقی بحیرۂ روم میں تازہ ترین صورت حال اور انقرہ-ایتھنز تعلقات پر بھی تبادلہ خیال کیا۔

ترک صدر کے ڈائریکٹوریٹ آف کمیشنز کے جاری کردہ بیان کے مطابق صدر ایردوان نے اسٹولٹن برگ کو بتایا کہ ترکی مشرقی بحیرۂ روم میں کشیدگی کو مذاکرات کے ذریعے ختم کرنا چاہتا ہے اور اقدامات کے ذریعے اپنی نیک نیتی ظاہر کر چکا ہے۔

صدر نے یہ بھی بتایا کہ ترکی نے یونان کے اشتعال انگیز اقدامات کے باوجود اپنے ذمہ دارانہ کردار کو نہیں چھوڑا۔ انہوں نے مزید کہا کہ حال ہی میں شروع ہونے والے دو طرفہ مذاکرات کے مستقبل کا انحصار ایتھنز کے مخلصانہ اقدامات پر ہے۔

ایردوان نے اس معاملے پر تعمیری سوچ رکھنے پر اسٹولٹن برگ کا شکریہ بھی ادا کیا۔

مشرقی بحیرۂ روم میں توانائی ذخائر کی تلاش کے معاملے پر حال ہی میں کشیدگی بڑھ گئی ہے۔ یونان، فرانس کی مدد سے، خطے میں ترکی کی جانب سے تیل و گیس کی تلاش کو متنازع بنا رہا ہے اور ترک ساحلوں پر واقع چند چھوٹے جزائر کو بنیاد بنا کر ترکی کی بحری سرحدوں کو محدود کرنے کی کوشش کر رہا ہے۔

دوسری جانب ترکی، جو بحیرۂ روم کے ساتھ طویل ترین ساحل رکھتا ہے، اپنے براعظمی کنارے (continental shelf) میں توانائی ذخائر کی تلاش کے لیے ڈرل شپس بھیج چکا ہے، جس کا کہنا ہے کہ خطے میں ترکی اور ترک جمہوریہ شمالی قبرص دونوں کے حقوق ہیں۔

تبصرے
Loading...