ادلب میں صورتحال ناقابل برداشت ہو گئی، ہم نے بہت صبر کر لیا، ترک صدر ایردوان

0 2,125

ترک صدر رجب طیب ایردوان نے یوکرائن کے دورہ کے دوران یوکرائنی ہم منصب ولودومیر زیلینسکی سے ون آن ون ملاقات اور اعلیٰ سطحی اسٹیٹجک میٹنگ کے بعد مشترکہ طور میڈیا سے بات کی، اس موقع پر انہوں نے شام کی صورتحال پر بات کرتے ہوئے کہا کہ ” ادلب کی صورتحال ہر گزرتے دن کے ساتھ بدقسمتی سے ناقابل برداشت شکل اختیار کرتی جا رہی ہے۔ ہم نے بہت صبر کر لیا اور اسدی رجیم نے افسوسناک طریقے سے روس کی آنکھ موندتے ہوئے بیرل بموں سے حملے شروع کر دئیے ہیں”۔

انہوں نے کہا کہ اس بمباری کے نتیجے میں ادلب، 3-4 ملین انسانوں کی جگہ ہے، یہ انسان ہماری سرحدوں کی طرف سیدھا آئے ہیں۔

ترک صدر نے کہا کہ خاندان، بچے بوڑھے سب کے سب مل کر، جو کچھ انہیں مل سکا، جو بچا کھچا سامان بیڈ، تکیہ کے ساتھ جو ملا اس کے ساتھ سرحد پر آ رہا ہے۔ اس سے پہلے ہمارے پاس 4 ملین کے قریب شامی موجود ہیں۔

ترک صدر ایردوان نے کہا کہ ہم ان کو اپنے ملک میں مہمان بنا رہے ہیں۔ انہیں کینٹینر ٹینٹوں میں، کپڑے کے ٹینوں میں مہمان ٹھہرایا، اس کے بعد آہستہ آہستہ انہوں نے خود جگہ بدلنا شروع کر دیا۔ ہم نے بھی ان کو ٹینٹوں اور کنٹینروں سے نکال کر گھروں میں اور آبادیوں میں جگہ دی۔ اب ان مزید آنے والے مہاجرین کو ہم کیسے سنبھالے گے، کہاں جگہ دیں گے؟

انہوں نے کہا کہ اس کا بہتر حل یہی ہے کہ ان کو گھروں سے نکالنے والوں اور ظلم کرنے والوں کو اب جواب دیا جائے۔

تبصرے
Loading...