سیکیورٹی کونسل میں ریفارم ضروری، ہمارا ماٹو ‘دنیا پانچ سے بڑی’ ہے، ایردوان

0 356

اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے 72 ویں اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے ترک صدر رجب طیب ایردوان نے کہا کہ ہم اس اہم ترین کونسل کو جمہوری، شفاف اور موثر ڈھانچے کے ساتھ دیکھنا چاہتے ہیں۔ ہم نے یہ تجویز کرتے ہیں کہ کونسل کے بیس برابری کی بنیاد پر ممبران ہونا چاہیں جو 2 سال پر خدمات سرانجام دیں اور اگلے سال ان میں آدھے بدل دئیے جائیں۔

انہوں نے دنیا بھر کے اہم ترین مسائل پر توجہ دلاتے ہوئے کہا کہ یہ تمام پیش رفت اور انسانی المیے ترکی کی تجویز کی تائید کرتے دکھائی دیتے ہیں جو وہ اقوام متحدہ کے بارے ریفارم دیتا ہے خصوصا سیکیورٹی کونسل کے بارے، جس پر ہمارا ماٹو ہے کہ "دنیا پانچ سے بڑی ہے”۔

ترک صدر نے کہا: "اگر ہم جو دنیا کے اقوام کے نمائندوں کے طور پر آج ایک ہی چھت کے تلے جمع ہوئے ہیں تو کیا اتنا قوت ارادہ نہیں پا سکتے کہ دہشت گردی تنظیموں کی طرف سے قتل عام، انسانی چیخ و پکار اور دیگر دشواریوں کی روک تھام کریں، ہر ایک اپنی مدد آپ کے طریقوں کی تلاش شروع کر رکھی ہے- اگر یہ نقطہ نظر وسیع پیمانے پر پھیل جاتا ہے تو دنیا افراتفری اور ظلم کے ایک نئے طوفان کی لپیٹ میں آ جائے گی- اگر مغربی ممالک اجنبیوں سے نفرت، نسل پرستی اور اسلاموفوبیا کو نہیں روکتے، اگر بحران زدہ علاقوں میں موجود ممالک، دہشت گرد تنظیموں اور غربت سے لڑنے کا کوئی مضبوط عزم پیدا نہیں کرتے، اور اگر ہم ان مقاصد کو پورا کرنے میں تعاون نہیں کرتے، تو ہم ایک پائیدار دنیا میں ہر ایک کو امن اور انسانی زندگی گزارنے کے مثالی مقصد تک کیسے پہنچ سکتے ہیں؟ ہم اس سیکرٹری جنرل کی طرف سے کیے جانے والے اقدامات کی حمایت کرتے ہیں، جس کے ساتھ ہم نے اسی سمت میں تعاون کیا جب وہ پناہ گزینوں کے ہائی کمشنر کے عہدے پر کام کر رہے تھے”۔

تبصرے
Loading...